اعجازالحق کی عمران خان سے ملاقات،سابق وزیراعظم کی مکمل حمایت کا اعلان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)مسلم لیگ ضیاء کے سربراہ اعجاز الحق نے سابق وزیراعظم عمران خان کی مکمل حمایت کا اعلان کردیا ۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ضیاء کے سربراہ اعجاز الحق نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان سے ان کی رہائشگاہ بنی گالہ میں ملاقات کی جہاں انہوں نے سابق وزیراعظم کو اپنی مکمل حمایت کا یقین دلایا ، اس ملاقات میں ملاقات میں سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی بھی شریک ہوئے ۔بتایا گیا ہے کہ اس موقع پر اعجاز الحق نے کہا کہ عمران خان ، شیخ رشید اور دیگر پر مقدمات کا اندراج افسوسناک ہے اس طرح کے طرز عمل سے ملک انتشار اور انارکی کی طرف جائے گا ،
ملک میں اب امن کا واحد حل جلد از جلد نئے انتخابات کا انعقاد ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ ملاقات کے لیے آنے اور حمایت کی یقین دہانی کرانے پر پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے اعجاز الحق کا شکریہ ادا کیا۔اس سے پہلے اسلامی نظریاتی کونسل کے سابق چیئرمین اور جمعیت علماء پاکستان کے رہنماء مولانا خان محمد شیرانی بھی عمران خان کے موقف کی حمایت کا اعلان کر چکے ہیں ، چیئرمین پی ٹی آئی عمرا ن خان سے مولانا خان محمد شیرانی نے بھی بنی گالہ میں ملاقات کی ، اس دوران ملکی سیاسی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ، مولانا خان محمد شیرانی نے اسلاموفوبیا کے خلاف عمران خان کی کوششوں کوخراج تحسین پیش کیا اور پاکستان کی آزادی و خودمختاری کے تحفظ کےلیے بھی عمران خان کی کوششوں کی بھی تعریف کی ، انہوں نے کہا کہ عمران خان کا تصورِ ریاستِ مدینہ اور اس کے قیام کیلئے کوششوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں ، عمران خان امت مسلمہ کو درپیش مسائل کا قابل عمل حل تجویز کرنے والے پہلے مسلم رہنما ہیں ، آزادی و خودداری کا علم بلند کرنے والوں کے خلاف سامراج نے ہمیشہ سازش رچائی ، ملک و ملت کی سربلندی کے لیے پی ٹی آئی کے ساتھ مل کر اپنا حصہ ڈالیں گے ۔اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مولانا شیرانی کے خیر سگالی کے جذبات کا خیرمقدم کرتا ہوں ، اللہ کے سامنے جھکنے والوں کو غلام بنانے کی کوششیں کی جارہی ہیں ، اقتدار کی بجائے اقدار اور قومی آزادی و خودمختاری کا تحفظ اہم ہے ، کٹھ پتلیوں کو قوم کے مستقبل پر غلامی کی تاریکیاں طاری کرنے کی اجازت نہیں دیں گے، اہلِ دانش آگے بڑھیں اور قومی حمیت و اثاثۂ مِلّی کے تحفظ کا فریضہ انجام دیں۔

متعلقہ آرٹیکلز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button