کراچی یونیورسٹی میں ہونے والے دھماکے کی تفصیلات سامنے آگئیں

کراچی( نیوز ڈیسک )کراچی یونیورسٹی میں ہونے والے دھماکے کی مزید تفصیلات سامنے آگئیں ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈی آئی جی ایسٹ مقدس حیدر نے کہا ہے کہ دھماکہ ایک بج کر 52 منٹ پر ہوا ‘ دھماکے میں 3 چینی باشندے بھی ہلاک ہوئے جن میں 2 خواتین اور ایک مرد شامل ہے ، ابتدائی طور پر کچھ نہیں کہہ سکتے، یونیورسٹی میں دھماکا تخریب کاری ہے یا حادثہ اس کی تحقیقات کررہے ہیں ، بم ڈسپوزل اسکواڈ کو طلب کیا گیا ہے۔پولیس حکام کا کہنا ہے کہ وین میں7 سے 8 افراد موجود تھے ، دھماکے میں جاں بحق ہونے والے چینی کراچی یونیورسٹی میں موجود چینی زبان سکھانے کے سینٹر

سے پڑھا کر واپس آ رہے تھے جب کہ وین کے باہر موجود افراد بھی اس سے متاثر ہوئے ، دھماکے میں رینجرز کے 4 اہلکار بھی زخمی ہوئے ، چاروں اہلکار موٹرسائیکل پر وین کی سکیورٹی پر تعینات تھے۔وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ واقعےکی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ جلد سامنے آجائے گی ، امن و امان کی صورتحال کو بہتر کرنا اولین ترجیح ہے۔خیال رہے کہ کراچی یونیورسٹی مین ہونے والے دھماکے مین 4 افراد جاں بحق ہوگئے واقعے کی وجہ سے متعدد افراد زخمی ہیں ، جامعہ کراچی کے طلبا کو لے جانے والی ایک وین میں دھماکہ ہوا ہے ، دھماکے کے وقت وین کراچی یونیورسٹی کے اندر موجود تھی ، دھماکے کی اطلاع ملتی ہی پولیس اور امدادی ادارے جائے حادثہ پر پہنچ گئے ، ابتدائی طور پر دھماکے کے نتیجے میں متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی تھیں تاہم بعد میں معلوم ہوا کہ واقعے کے نتیجے میں 4افراد لقمہ اجل بن گئے ، دھماکے کی آواز دور تک سنائی دی گئی جس کی وجہ سے لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں