عمران خان کیساتھ گزارا نہیں!! اہم اتحادی جماعت نے تحریک انصاف کو وزیراعظم تبدیل کرنے کا مشورہ دیدیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) اسلام آباد کے پارلیمنٹ لاجز میں ایم کیو ایم پاکستان کی قیادت سے پی ٹی آئی کے وفد کی ملاقات، ایم کیو ایم پاکستان نے پی ٹی آئی کو وزیر اعظم تبدیل کرنے کا مشورہ دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم پاکستان نے ملک میں سیاسی بحران کے خاتمے کے لیے پی ٹی آئی کو وزیر اعظم تبدیل کرنے کا مشورہ دے دیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ گزشتہ روز اسلام آباد کے پارلیمنٹ لاجز میں متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کی قیادت سے پی ٹی آئی کے وفد نے ملاقات کی۔

حکومتی وفد میں اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، وزیر دفاع پرویز خٹک اور اسد عمر شامل تھے جبکہ ایم کیو ایم پاکستان کے وفد میں ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی، وسیم اختر، امین الحق، خواجہ اظہار الحسن اور جاوید حنیف شامل تھے۔حکومتی وفد نے ایم کیو ایم کی قیادت کو یقین دلایا کہ ان کے تمام مسائل کو حل کیا جائے گا، اس وقت حکومت مشکل میں ہے اور ہمیں تنہا نہ چھوڑیں، جو وعدے کیے ہیں وہ پورے کریں گے۔ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم نے شکوہ کیا کہ ساڑھے 3 سال سے اتحادی ہیں، بتائیں کون سا وعدہ پورا کیا؟ ہمارے دفاتر اب تک بند، لاپتا افراد بھی بازیاب نہیں ہوئے۔ذرائع کے مطابق حکومتی وفد نے ایم کیو ایم کو وزیر اعظم عمران خان کا خصوصی پیغام بھی پہنچایا جبکہ ایم کیو ایم نے پہلی تجویز یہ دی کہ وزیر اعظم اپنی جگہ پی ٹی آئی سے کسی دوسرے رہنما کو وزیر اعظم نامزد کر دیں تاکہ اتحادی جماعتیں کوئی مثبت فیصلہ کر سکیں۔ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ حکومت کی 3 بڑی اتحادی جماعتوں نے اپوزیشن کی حمایت کافیصلہ کرلیا۔

واضح رہے کہ نجی ٹی وی کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ حکومتی اتحادی جماعتیں متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان، مسلم لیگ ق اور بلوچستان عوامی پارٹی ( بی اے پی) اپوزیشن کی حمایت کا اعلان کریں گے اور یہ اعلان 25 مارچ کومتوقع ہے۔ذرائع کے مطابق اپوزیشن کی حمایت کا اعلان چوہدری برادران کے گھرپرمشترکہ پریس کانفرنس میں ہوگا۔ذرائع کا دعویٰ ہے کہ گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) کے 2 ارکان بھی اپوزیشن کی حمایت کااعلان کریں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومتی اتحادی اپوزیشن کی حمایت پر حکمت عملی تیار کررہے ہیں تاہم حکومتی اتحادیوں کی طرف سے باضابطہ تصدیق نہیں کی گئی۔

متعلقہ آرٹیکلز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button