اسلام آباد میں او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کا تاریخی اجلاس جاری، پاکستان عالمی توجہ کا مرکز بن گیا

اسلام آباد ( نیوز ڈیسک )پاکستان کی میزبانی میں او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کا 48 ویں اجلاس جاری ہے ، جس کہ وجہ سے پاکستان اس وقت ایک بار پھر عالمی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اجلاس کی صدارت کررہے ہیں ، جس میں او آئی سی رکن ممالک کے وزرائے خارجہ اور مبصر ممالک کے نمائندے بھی شریک ہیں ، وزیر اعظم عمران خان او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کریں گے ۔بتایا گیا ہے کہ او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کے اجلاس میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین صورت حال کا جائزہ لیا جائے گا

اور جموں و کشمیر پر او آئی سی رابطہ گروپ کا اجلاس بھی ہو گا ، وزراء خارجہ اجلاس میں او آئی سی کے 17 ویں غیرمعمولی اجلاس کے فیصلوں کا بھی جائزہ لیا جائے گا ۔خیال رہے کہ او آئی سی اقوام متحدہ کے بعد دُنیا کی دوسری بڑی بین الاقوامی تنظیم ہے اور دنیا بھر کے 57 مسلم ممالک اس کے رکن ہیں ، او آئی سی کے فیصلوں پر عملدرآمد کا جائزہ لینے کیلئے ہر سال اجلاس ہوتا ہے ، پاکستان ، سعودی عرب ، ترکی ، افغانستان ، ایران ، انڈونیشیا ، ملائشیا ، اردن ، کویت ، لبنان ، لیبیا ، الجزائر ، چاڈ ، مصر ، یمن ، سوڈان ، صومالیہ ، فلسطین ، مراکش اور نائیجیریا بنیادی ارکان ہیں جب کہ چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی بطور خصوصی مہمان اجلاس میں شریک ہیں ، اس کے علاوہ او آئی سی غیر رکن ممالک ، اقوام متحدہ ، عرب لیگ اور گلف کوآپریشن کے سینیئر نمائندگان بھی کانفرنس میں شریک ہیں جب کہ یہ تمام معزز مہمان 23 مارچ کی یوم پاکستان کی پریڈ میں بھی شرکت کریں گے ۔علاوہ ازیں پاکستان ایک سال کیلئے او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کا چیئرمین بن گیا ، او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کی چیئرمین شپ ایک سال کے لیے پاکستان کو سونپی گئی ہے۔

متعلقہ آرٹیکلز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button