خواجہ آصف کی پولیس اور بیوروکریسی کو دھمکی پر حکمران جماعت کا ردعمل آگیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستام مسلم لیگ ن کے رہنماء خواجہ آصف کی پولیس اور بیوروکریسی کو دھمکی پر حکمران جماعت کا ردعمل آگیا ۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ اپنے ایک بیان میں پی ٹی آئی کے رہنماء سینیٹر فیصل جاوید خان کہتے ہیں کہ آرٹیکل 6 ان پر لگے گا جو بکیں گے اور جو خریدیں گے ، کیوں کہ یہ آئینی تبدیلی نہیں بلکہ آئین سے غداری ہے اور یہ رکن اسمبلی کی حلف ( آرٹیکل 65) سے غداری ہو گی ۔انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 63 کے ساتھ ساتھ آرٹیکل 62 کا اطلاق بھی ہو سکتا ہے یعنی تاحیات نا اہلی ہوگی کیوں کہ سپریم کورٹ کا 5 رکنی

بینچ اس حوالےسے 2018ء میں فیصلہ دے چکا ہے ۔خیال رہے کہ پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماء خواجہ آصف نے بیوروکریسی اور پولیس کو آرٹیکل 6 کے استعمال کی دھمکی دے دی ، ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ متحدہ اپوزیشن عدم اعتماد کے ذریعے آئینی تبدیلی کا راستہ اختیار کر رہی ہے ، جس کا مقصد آئین اور قانون کی حکمرانی قائم کرنا ہے ۔خواجہ آصف نے سخت الفاظ استعمال کرتے ہوئے کہا کہ بیوروکریسی اور پولیس نے سبوتاژ کی کوشش کی تو آرٹیکل 6 واضح ہے وعدہ ہےاس پر عمل ضرور ہوگا ۔ علاوہ ازیں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماء خواجہ محمد آصف نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد کی جو فضا قائم ہورہی ہے اس کے نتائج جلد عوام کے سامنے ہوں گے ، تحریک انصاف کے لوگ ہم سے رابطے میں ہیں ، حکمران اور ادارے ذاتی مفادات چھوڑ کر ملکی مفادات کو سامنے رکھیں ، عوام ہم سے پوچھتی ہے کہ اگر اقتدار میں آگئے تو مہنگائی کیسے کم کریں گے؟ اور بجلی، گیس و پیٹرول کی قیمتیں کیسے گھٹائیں گے؟ ہمارے دوست ممالک جو ہماری آواز کے منتظر رہتے تھے، اب پہلو چھڑا رہے ہیں اور نیشنل بینک پر بھاری جرمانے ہو رہے ہیں ، بجلی اور پیٹرول کی قیمتیں مزید بڑھنے جارہی ہیں ، موجودہ حکمرانوں کو گھر بھیجنے کاایک ہی حل ہے کہ ووٹ کے ذریعے ووٹ کی عزت کو بحال کیا جائے ، موجودہ حکمرانوں کے دن گنے جا چکے ہیں ، نئے آنے والے حکمرانوں کو مینڈیٹ نہ دیا گیا تو مسائل پیدا ہوجائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں