چونیاں میں بچوں کیساتھ زیادتی کا کیس، مجرم سہیل کو عبرتناک سزا سنادی گئی

لاہور(نیوز ڈیسک)چونیاں میں 4 بچوں سے زیادتی اور قتل کے دیگر دو کیسزکا فیصلہ سنا دیا گیا۔ انسداد دہشتگری عدالت نے مجرم سہیل کو 6 بار سزائے موت کا حکم دیدیا۔تفصیل کے مطابق چونیاں میں بچوں سے زیادتی کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے۔ انسداد دہشتگری عدالت نے ملزم سہیل شہزادہ کو دو مقدمات میں مجموعی طور پر چھ بار سزاٸے موت، دو بار عمر قید اور 64 لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنا دی ہے۔ملزم کا 342 کا بیان ریکارڈ کرنے کے بعد انسداد دہشتگری عدالت کے جج محمد اقبال نے کیس پر فیصلہ سنایا۔ عدالت اس سے قبل دو مقدمات میں مجرم سہیل شہزاد کو سزائے موت کی سزائیں سنا چکی ہے۔

مجرم کے خلاف تھانہ سٹی چونیاں میں بچوں کے ساتھ زیادتی اور قتل کا مقدمہ دہشت گردی کی خصوصی دفعات کے تحت درج ہے۔ مجرم نے 342 کے حتمی بیان میں الزامات کو جھوٹا قرار دیا۔ ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل عبدالجبار ڈوگر اور میاں طفیل نے حتمی بیان قلمبند کرایا۔ سیکیورٹی ایشوز کے باعث ملزم کا جیل ٹرائل کیا گیا۔یاد رہے کہ گزشتہ سال انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے چونیاں میں چار بچوں کو زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کرنے والے سفاک مجرم سہیل شہزاد کو تین مرتبہ سزائے موت دینے کا حکم سنایا تھا۔یہ فیصلہ انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت کے جج محمد اقبال نے کوٹ لکھپت جیل میں سنایا۔ انہوں نے مجرم سہیل شہزاد کو اس کیس میں ایک مرتبہ عمر قید کی سزا بھی سنائی۔انسداد دہشت گردی عدالت نے مجرم سہیل شہزادہ کے خلاف 23 گواہوں کے بیانات قلمبند کیے جبکہ مجرم کا 342 کا حتمی بیان بھی ریکارڈ کیا گیا۔ ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل عبدالرؤف وٹو کی سربراہی میں تین رکنی ٹیم نے دلائل دیے۔ سیکیورٹی ایشوز کے باعث ملزم کا جیل ٹرائل کیا گیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.