خواجہ سراؤں نے اسمبلیوں میں نمائندگی اور وراثت میں حق دینے کا مطالبہ کر دیا

لاہور (نیوز ڈیسک)خواجہ سرا برادری نے قومی و صوبائی اسمبلیوں میں نمائندگی اور وراثت میں حق دیئے جانے کا مطالبہ کردیا اور کہا کہ حکومت خواجہ سرا کمیونٹی سے کیے گئے وعدے پورے کرے۔ تفصیلات کے مطابق خواجہ سراؤں کی جانب سے یہ مطالبہ تعلیم یافتہ خواجہ سرا جنت علی نے لاہور پریس کلب میں رکن پنجاب اسمبلی عظمیٰ کاردار، سعدیہ سہیل، خواجہ سراء رہنما نایاب علی، شمع، نوشی، نیلم، عاشی جان، انمول اور دیگر کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔پریس کانفرنس کے بعد خواجہ سراؤں نے لاہور پریس کلب سے ایوان اقبال تک آگاہی واک بھی کی جسے انہوں نے ”ٹرانس پریڈ” کا نام دیا گیا۔

اس واک کے دوران خواجہ سراؤں کی بڑی تعداد بگھیوں پر بیٹھ کر بینڈ کے ساتھ ایوان اقبال تک پہنچی۔واک میں اسلام آباد کراچی، لاہور، پشاور، گوجرانوالہ اور ایبٹ آباد کے خواجہ سراوں نے شرکت کی۔ جنت علی کا کہنا تھا کہ خواجہ سرا پہلے بھیک مانگتے اور سڑکوں پر ذلیل ہوتے تھے، اب خواجہ سرا پڑھے لکھے ہیں اور نوکریاں کررہے ہیں، ہم 19 دسمبر کو پاکستان بھر میں ٹرانس جینڈر کے دن کے طور پر مناتے ہیں، خواجہ سراؤں پر ہر قسم کا تشدد روکا جائے اور ہمیں نظرانداز کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے۔جنت علی نے اس واک کے دوران گفتگو کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ عام لوگوں کی طرح ہمیں بھی اسمبلیوں میں برابری کا حصہ دیا جائے، وراثت میں حصہ دیا جائے، ہماری کمیونٹی میں بھی انتہائی قابل اور پڑھے لوگ موجود ہیں۔ جنت علی نے اُمید ظاہر کرتے ہوئے مزید کہا کہ انشاءاللہ آنے والے وقت میں ہم الیکشن میں بھرپور حصہ لیں گے اور آئندہ ٹرانسجینڈر قومی اور صوبائی اسمبلی کا حصہ بھی ہوں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں