ریاض فتیانہ گلاسگو میں زرتاج گل اور امین اسلم کے درمیان ہوئے جھگڑے کی بات پر ڈٹ گئے

ریاض فتیانہ گلاسگو میں زرتاج گل ااسلام آباد (نیوز ڈیسک)ریاض فتیانہ گلاسگو میں زرتاج گل اور امین اسلم کے درمیان ہوئے جھگڑے کی بات پر ڈٹ گئے۔ریاض فتیانہ نے کہا ہے کہ انہوں نے کہا کہ گلاسگو میں زرتاج گل اور امین اسلم کے درمیان لڑائی ہوئی، اپنے موقف پر قائم ہوں۔ریاض فتیانہ نے شوکاز نوٹس کا جواب دینے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے زرتاج گل اور امین اسلم کے درمیان لڑائی کے دو گواہ بھی سامنے لانے کا اعلان کیا ہے۔کہا کہ روبینہ خورشید عالم اور شزہ فاطمہ بھی کانفرنس میں موجود تھیں۔پارٹی سے فارغ کرنا ہےتو کر دیں،بے عزتی برداشت نہیں کروں گا،

حقیقت سامنے لاؤں گا۔ریاض فتیانہ نے وزراء کے درمیان لڑائی کے معاملے پر سخت موقف اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ واضح رہے کہ گذشتہ ہفتے ریاض فتیانہ نے انکشاف کیا کہ وزیر مملکت زرتاج گل اور امین اسلم کے درمیان کانفرنس میں لڑائی ہوئی،زرتاج گل امین اسلم کے ساتھ لڑ کر وطن واپس آ گئی ،گلاسکو کانفرنس میں افسران کی نااہلی کے باعث پاکستان کی نمائندگی غیر معیاری تھی۔انہوںنے کہاکہ نیپال اور دوسرے ممالک کے وفد کو پاکستان کیمپ میں کسی افسر نے ریسیو نہیں کیا۔ چیئر مین کمیٹی نے کہاکہ وزارت موسمیاتی تبدیلی کے نااہل افسران کے باعث قومی خزانے کا کروڑوں روپے ضائع ہوا۔چیئرمین کمیٹی رانا تنویر حسین نے آڈٹ حکام کو تحقیقات کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔ ملک امین اسلم نے حکومتی وزراء کے درمیان گلاسکو میں جھگڑے کی خبروں کو بے بنیاد قرار دے دیا تھا اور ملک امین اسلم نے جھگڑے کی خبروں کے بے بنیاد اور گمراہ کن قرار دیتے ہوئے رکن قومی اسمبلی ریاض فتیانہ کے خلاف پارٹی کے انضباطی ونگ سے رجوع کرنے کا اعلان کیا تھا۔بعدازاں پی ٹی آئی نے ریاض فتیانہ کو شوکاز نوٹس جاری کیا تھا۔ور امین اسلم کے درمیان ہوئے جھگڑے کی بات پر ڈٹ گئے

اپنا تبصرہ بھیجیں