پیٹرولیم کمپنیوں نے کھلے پیٹرول پمپس کی فہرست جاری کر دی

لاہور (نیوز ڈیسک) پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی جانب سے ملک بھر میں ہڑتال جاری ہے لیکن کچھ پیٹرول پمپس ایسے بھی ہیں جو کھلے رہیں گے۔ ملک کے مختلف شہروں میں پیٹرولم پمپس پر جزوی دستیابی جاری ہے۔ اس حوالے سے پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او) اور شیل کی جانب سے ملک بھر میں کمپنی کی زیرِ ملکیت کھولے گئے پیٹرول پمپس کی فہرست جاری کی گئی، اس فہرست کے مطابق پی ایس او کے کراچی میں 7 مقامات پر پیٹرول پمپ کھلے ہیں۔کراچی میں کلفٹن روڈ، عبداللّٰہ شاہ غازیؒ کے مزار کے قریب، خیابانِ اتحاد، کورنگی، مین کورنگی روڈ، نارتھ ناظم آباد بلاک اے اور کے ڈی اے

ورکشاپ شارعِ فیصل پر واقع پیٹرول پمپ کھلے ہوئے ہیں جہاں پیٹرول دستیاب ہے۔ جبکہ شیل کی جانب سے بھی کراچی میں 7 مقامات پر پیٹرول پمپ کھلے ہوئے ہیں۔شیل کی جانب سے جاری کردہ فہرست کے مطابق کراچی میں عسکری مین راشد منہاس روڈ، ایم اے جناح روڈ، خیابانِ بحریہ ڈیفنس فیز 5، سن سیٹ بلیوارڈ ڈیفنس فیز 2، کلفٹن بلاک 8، مین سپر ہائی وے گیٹ اور شارعِ فیصل پر واقع پیٹرول پمپس پر پیٹرول دستیاب ہے۔دوسری جانب لاہور میں ایمپرس روڈ پر واقع پی ایس او پیٹرول پمپ پر پیٹرول کی سپلائی بند کر دی گئی۔ ایمپرس روڈ پر واقع ہس مارٹ پٹرول پمپ ٹینٹ لگا کر بند کر دیا گیا۔ پیکو روڈ پر پی ایس او پمپ کی جانب سے بھی پیٹرول کی فراہمی بند کر دی گئی۔ یو ای ٹی جی ٹی روڈ پر پی ایس او کے دونوں پمپس بند کر دیئے گئے، پیکو روڈ پر شیل، ٹوٹل اور اٹک کی جانب سے پیٹرول کی فروخت کا سلسلہ جاری ہے۔میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا کہ ماڈل ٹاؤن فیروزپور روڈ پر واقع شیل پمپ پر پیٹرول کی فروخت جاری ہے جبکہ ماڈل ٹاؤن لنک روڈ پر واقع ٹوٹل پمپ کو بھی بند کر دیا گیا ہے۔ ایسوسی ایشن کی جانب سے مطالبات کی منظوری تک پیٹرول پمپس بند رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ ایسوسی ایشن کی جانب سے کمیشن مارجن 3 روپے 30 پیسے سے بڑھا کر 6 روپے کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔واضح رہے کہ پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے منافع کے مارجن کو بڑھانے کے لیے ملک بھر میں ہڑتال کر رکھی ہے جس کی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ تاہم پاکستان اسٹیٹ آئل اور پیٹرولیم کمپنی شیل نے پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی جانب سے کی جانے والی ہڑتال سے لاتعلقی ظاہر کرتے ہوئے اپنے پیٹرول پمپس کھلے رکھنے کا اعلان کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں