وزیراعظم نے جنگلات پر قبضے کرنے والوں کو آخری وارننگ جاری کر دی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سیاسی اشرافیہ لینڈ مافیا کےساتھ جنگلات سمیت بڑے سرکاری رقبے پر قابض ہے، وزیراعظم عمران خان نے جنگلات پر قبضے کرنے والوں‌ کو آخری وارننگ جاری کر دی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ملک بھر کے جنگلات کی اراضی پر ہونے والے قبضوں پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے جنگلات پر ہونے والے قبضوں سے متعلق ایک بیان جاری کیا، جس میں حقائق پیش کیے ہیں۔وزیراعظم نے بتایا کہ ’پاکستان میں جنگلات کی زمینوں پر لینڈ مافیا قابض ہے، جس کی وجہ سے ملک میں جنگلات کے رقبے میں مسلسل کمی ہورہی ہے‘۔

انہوں نے اس حوالے سے حکومت کے علم میں آنے والے ہوشربا حقائق قوم کے سامنے رکھتے ہوئے بتایا کہ لینڈ مافیا کے قبضے میں ملک کے تین بڑے شہروں کی تقریباً 5595 ارب روپے مالیت کی سرکاری اراضی ہے، جنگلات کے زیر قبضہ رقبےکی قیمت تقریباً 1869 ارب روپے ہے۔وزیراعظم نے بتایا کہ ’زمینوں کا ڈیجیٹل ریکارڈ جمع کرنے کی کوشش کی تو حکومت کو شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا، ای وی ایم پر احتجاج کی طرح کیڈیسٹرل میپنگ میں بھی مزاحمت کی گئی‘۔انہوں نے مزید بتایا کہ سرکاری اراضی کےابتدائی سروے میں ہی مزاحمت کی وجوہات سامنےآگئیں، سیاسی اشرافیہ لینڈ مافیا کےساتھ جنگلات سمیت بڑے سرکاری رقبے پر قابض تھی۔واضح رہے کہ جنگلات دنیا کے تین چوتھائی حیوانات اور نباتات کو محفوظ بناتے ہیں اور فضا سے کاربن ڈائی آکسائڈ جذب کرتے ہیں اور خوراک، ایندھن اور ادویات بھی فراہم کرتے ہیں۔لیکن وہ تیزی سے صاف ہو رہے ہیں، ڈنمارک کا جتنا رقبہ ہے اتنے رقبے پر ہر سال لگے پرانے جنگلات صاف ہو جاتے ہیں۔کیو بُوٹینک گارڈن سے وابستہ محقق کا کہنا ہے کہ درست اقسام کے درخت درست جگہوں پر لگانا تمام ملکوں کے لیے ترجیح ہونی چاہیے کیونکہ دنیا کو ایک ایسی دہائی کا سامنا ہے جو کرۂ ارض کو بچانے کے لیے انتہائی اہم ہو گی۔دنیا کے کئی حصوں میں بڑے پیمانے پر درخت لگانے کے منصوبے جاری ہیں تاکہ جو درخت اور جنگلات صاف ہو گئے ہیں ان کا ازالہ کیا جا سکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں