عامر لیاقت نے فواد چوہدری کو تھپڑ مارنے کی دھمکی دینے کی وجہ بتا دی

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک )رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری کو تھپڑ مارنے کی بات اس لیے کی تھی کیونکہ انہوں نے کہا تھا کہ عامر لیاقت کا استعفیٰ روز آتا ہے۔سماء ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عامر لیاقت کا کہنا تھا کہ انہوں نے اس بات پر فواد چوہدری کو جواب دیا کہ وہ میرے معاملات سے دور رہیں ورنہ میرا تھپڑ ان کے تھپڑ سے بھاری ثابت ہو گا تاہم ان کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری سے میری دوستی اور ایک گھریلو تعلق ہے۔اس لیے فواد چوہدری نے میری بات کا جواب نہیں دیا۔انہوں نے کہا کہ اگر مولانا فضل الرحمن صاحب مہنگے ہیں تو پاکستان میں پھر

مہنگائی ہو گی لیکن اگر سستے ہوئے یعنی ہر کسی کو دستیاب ہیں تو اس کا مطلب ملک میں مہنگائی نہیں ہے۔عامر لیاقت کا کہنا تھا کہ ملک میں اس قدر مہنگائی ہے کہ اپوزیشن کو تو بہت پہلے نکلنا چاہئیے تھا مگر مولانا فضل الرحمان کا ملک میں مہنگائی کے خلاف نکلنا باعث حیرت ہے۔انہوں نے تحریک انصاف سے استعفیٰ دے چکا ہوں اور اب اس جماعت سے میرا کوئی تعلق نہیں۔اس لیے میرے نام کے ساتھ تحریک نہ لکھا کرے۔عامر لیاقت کا کہنا تھا کہ علی امین گنڈا پور کا عوام کو کھانا کم کھانے کا مشورہ دینا قابل مذمت ہے۔لوگ ایسا کیوں کریں انہوں نے تو مہنگائی ختم کرنے کے لیے ووٹ دیا تھا۔انہوں نے کہا کہ ملک میں مہنگائی بالکل ہے اور اس کی ذمہ دار بھی حکومت ہے تاہم استعفی دینا ہر مسئلے کا حل نہیں صرف وزارتوں میں تبدیلی کی ضرورت ہے۔یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے استعفیٰ دینے کا اعلان کیا لیکن وجوہات سے آگاہ نہیں کیا۔ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے کہا کہ اسمبلی رکنیت سے استعفیٰ کے ساتھ تحریک انصاف کو بھی چھوڑ چکا ہوں اور مزید دو اراکین بھی بہت جلد مستعفی ہونے والے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر میں نے استعفے کی وجہ بتادی تو پورا پاکستان دہل جائے گا اور قیامت آ جائے گی۔ عامر لیاقت نے کہا کہ پی ٹی آئی کے انٹرپاس گورنر، علی زیدی اور فیصل وواڈا سمیت رہنماؤں نے کراچی تباہ کر دیا، اب سب کا مقابلہ کروں گا۔ جنہیں کراچی کو تباہ کرنا تھا انہوں نے تباہ کردیا اللہ پاکستان کی حفاظت کرے ورنہ جو کچھ ہورہا ہے بہت برا ہورہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں