نیا پاکستان ہائوسنگ پروگرام کے تحت گھروں کی فراہمی شروع

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے تحت گھروں کی فراہمی کے منصوبے کا آغاز ہوگیا ، وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں افتتاح کیا ، پہلے مرحلے میں 1000 سے زائد فلیٹس اور 500 مکانات الاٹ کئےجائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق اس حوالے سے اسلام آباد میں محنت کش طبقے میں گھروں اور فلیٹس الاٹ کرنے کی تقریب منعقد کی گئی ، جس میں وزیراعظم عمران خان نے پودا لگا کر تقریب کا آغاز کیا اور منصوبے کی نقاب کشائی بھی کی، اس دوران وزیراعظم نے گھروں کا معائنہ کیا اور اس موقع پرعمران خان کو منصوبے سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی جس

کے بعد وزیراعظم مزدورطبقے میں رہائشی فلیٹس اور مکانات تقسیم کیے۔محنت کشوں کے لئے گھر دینے کی تقریب سے وزیراعظم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ زلفی بخاری اور ان کی ٹیم کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، 25 سال پرانے منصوبے کو مکمل کر کے حقیقت میں بدلنا بڑی کامیابی ہے، کسی نے نہیں سوچا تھا غریب لوگوں کیلئے گھر بنائے جائیں گے، ہم نے پیچھے رہ جانے والے طبقے کو اوپر لانا ہے، کسی پر احسان نہیں کر رہے، یہ محنت کشوں کا حق ہے، محنت کش کرائے کے مکان میں رہتے تھے، اب کرایہ قسطوں میں جائے گا اور گھر ان کی ملکیت ہو جائے گا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ گھروں کی تعمیر کیلئے آسان قرض کی فراہمی کا قانون لے کر آئے، شہروں میں مزدور، چھوٹے سرکاری ملازمین کیلئے بھی گھر بنانا ناممکن ہوتا ہے، اس منصوبے میں بینک شامل نہ ہوتے تو ہم یہ کام نہیں کرسکتے تھے، متعلقہ قانون کے عدالت میں زیر التوا ہونے کے سبب اس کام میں تاخیر ہوئی، متعلقہ قانون کو عدالت سے کلیئر ہونے میں 2 سال لگے۔قبل ازیں زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام غریب کیلئے بہترین اقدا م ہے، ایک ہزار 508 خاندانوں کو گھر دیئے جا رہے ہیں، محنت کش لوگ اپنے خون پسینے سے ملکی معیشت چلاتے ہیں، پروگرام کے تحت 3 لاکھ روپے کی سبسڈی لی، منصوبے کے تحت ایک گھر 23 لاکھ 24 ہزار کا ہے، کرائے کے گھر ختم کر کے لوگوں کو مالکانہ حقوق دیئے، 10 فیصد ادا کرنے پر آپ کو گھر کی چابی اور قبضہ ملے گا، 90 فیصد رقم آپ 5 سے 20 سال میں قسطوں میں ادا کرسکتے ہیں۔

متعلقہ آرٹیکلز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button