اسلام آباد میں ہندووَں کو ’شمشان گھاٹ‘ بنانے کی اجازت دینے کی سفارش

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )اسلامی نظریاتی کونسل نے سفارش کی ہے کہ ہندوؤں کو شمشان گھاٹ اور بنانے کی اجازت دینے کی سفارش کر دی ہے۔اسلامی نظریاتی کونسل نے سفارش کی کہ سید پور ویلج میں قائم مندر ہندوؤں کے حوالے کیا جائے۔ ہندوؤں کو کمیونٹی سینٹر قائم کرنے کی بھی اجازت کی سفارش کردی گئی ہے۔کونسل نے اسلام آباد میں کوئی نیا مندر تعمیر کرنے کی سفارش نہیں کی۔اسلام آباد ہائی کورٹ نے نئے مندر کی تعمیر کیلئے فنڈنگ کا معاملہ اسلامی نظریاتی کونسل کو بھیجا تھا۔ وفاقی وزیر مذہبی امور نے بھی کہا تھا کہ وفاقی دارالحکومت میں مندرکی تعمیر کا فیصلہ اسلامی نظریاتی کونسل کرے گی۔وزیرمذہبی امور نے کہا تھا کہ اسلام آباد

میں مندر کیلئے حکومت نے فی الحال کسی قسم کے فنڈز نہیں دیے گئے۔اقلیتی ارکان پارلیمنٹ نے وزارت مذہبی امور کو بھی مندر کی تعمیر کیلئے فنڈ زکی درخواست کی تھی تاہم وزارت مذہبی امور اقلیتوں کی عبادت گاہوں کی تعمیر کیلئے فنڈز جاری نہیں کرتی ہے۔ہندو ارکان اسمبلی نے2017 میں عبادت گاہ کی تعمیر کیلئے ہیومن رائٹس کمیشن میں درخواست دی تھی۔ وزارت انسانی حقوق کی درخواست پر وفاقی ترقیاتی ادارے (سی ڈی اے) نے 2020 میں مندر کیلئے جگہ الاٹ کی۔ہندو برادری کی عبادت گاہ کیلئے اسلام آباد کے سیکٹر ایچ نائن ٹو جگہ مختص کی گئی ہے۔ فی الحال ہندو برادری مندرکاسنگ بنیاد اور تعمیر اپنے وسائل سے کر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں