تکلم سے لگے گھائو پہ مرہم سی دوا اردوا ۔۔۔ فیصل اظفر علوی

تکلم سے لگے گھاؤ پہ مرہم سی دوا اردو
کوئی ثانی نہیں ہے سب زبانوں سے جدا اردو

تجھے بچوں کو ورثے میں اگر تہذیب دینی ہے
بٹھا کر پاس اپنے پھر محبت سے سکھا اردو

مقامِ میرؔ و غالبؔ، فرحتؔ و محسنؔ جدا کیسے
اگر پوچھے کوئی تجھ سے تو فوراََ سے بتا اردو

سوال اٹھا یہ محفل میں محبت کی زباں کیا ہے
کہا اردو، سنا اردو، لکھا اردو، پڑھا اردو

غزل، افسانہ، شعر و نظم، لوری، مرثیے، نوحے
ڈراما، فلم، پیروڈی، کہانی، انتہا اردو

مسلسل دیر تک سننا جسے اچھا لگے اظفرؔ
مہکتی سی ہوا اردو، وہ جذبوں کی صدا اردو

فیصل اظفرؔ علوی

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.