ہمارے وزیراعظم ایک بہت اچھے اداکار ہیں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)نجی ٹی وی چینل پر پروگرام میں بات کرتے ہوئےسینئرصحافی و اینکر پرسن حامد میر نے وزیراعظم عمران خان کو اچھا اداکار قرار دے دیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے وزیراعظم عمران خان نے ایسے کئی وعدے کیے جو پورے ہی نہیں ہوئے۔ عمران خان نے الیکشن سے قبل کہا تھا کہ اگر اللہ نے ہمیں موقع دیا تو ہم پی ٹی وی کو ایک ایسا ادارہ بنائیں گے جس میں تمام متنازعہ ویوز دکھانے کے ساتھ ساتھ حکومت پر ہونے والی تنقید اور اس کے علاوہ سب چیزوں کی اجازت دے جائے گی۔ٹھیک اُسی طرح جس طرح پرائیویٹ ٹی وی چینلز پر ہوتا ہے۔ پی ٹی وی حکومت کا ایک ماؤتھ پیس یا پراپیگنڈہ مشین نہیں بنے گی۔

سیاسی مخالفین کے خلاف پراپیگنڈہ کرنا اور سیاسی مخالفین کو اپنی صفائی کا موقع نہ دینا ، یہ بالکل جمہوریت کے خلاف ہے۔لیکن دوسری جانب جب نعیم بخاری پی ٹی وی کے چئیرمین بنے تو نعیم بخاری نے اپنے حالیہ بیان میں صاف صاف کہا کہ اپوزیشن کو پی ٹی وی پر بالکل وقت نہیں ملے گا ، یہ پی ٹی وی ہے کوئی دوسرا چینل نہیں ہے۔پی ٹی وی ایک سرکاری ٹی وی چینل ہے جو حکومت کی نمائندگی کرتا ہے۔ عمران خان نے الیکشن سے قبل کہا کہ بڑے بڑے محلات وزیراعظم اور گورنر ہاؤس کو تعلیمی ادارے بنائیں گے۔ لیکن یہ وعدہ بھی پورا نہیں ہو سکا۔سینرصحافی حامد میر نے کہا کہ یہ وہ اچھے اچھے وعدے ہیں جو الیکشن سے قبل عمران خان عوام سے کرتے رہے ہیں۔ اب یہ وعدے پورے ہوئے ہیں یا نہیں یہ عوام بہتر جانتی ہے۔ حامد میر نے اپنے پروگرام میں ایک ویڈیو کلپ چلاتے ہوئے کہا کہ عمران خان بہت اچھے اداکار ہیں۔دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ترجمانوں کا اجلاس ہوا جس میں ملکی سیاسی معاشی اور مجموعی صورت حال پر مشاورت کی گئی، اجلاس میں وفاقی وزیر حماد اظہر نے معاشی صورتحال پر ترجمانوں کو بریفنگ دی۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ معاشی اعشاریے ہر گزرتے دن کے ساتھ بہتر ہو رہے ہیں، ٹیکسٹائل انڈسٹری سے بھی حوصلہ افزا اعدادوشمار سامنے آئے ہیں تاہم معاشی ٹیم سے کہا ہے کہ صنعت کی بہتری کے لیے تمام ریاستی وسائل استعمال کریں۔اجلاس میں اپوزیشن کی جانب سے جلسے جلوس اور حکومت مخالف مہم پر وزیراعظم عمران

خان کا کہنا تھا کہ کورونا کی صورتحال روز بروز بڑھ رہی ہے، پی ڈی ایم کے جلسوں سے کوئی سیاسی فرق نہیں پڑ رہا، چوری کے پیسے چھپانے کے لیے لوگوں کو کورونا کے رحم و کرم پر چھوڑا جا رہا ہے، دنیا کورونا سے لڑ رہی ہے اور یہاں تماشہ بنایا جا رہا ہے۔اجلاس میں معاون خصوصی زلفی بخاری نے اوورسیز پاکستانیوں سے متعلق معاملات پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ یو اے ای میں لیبر ویزہ پر کسی قسم کی کوئی پابندی نہیں ہے، یو اے ای حکام نے انتہائی تربیت یافتہ پاکستانی لیبر کی حوصلہ افزائی کی ہے، عرب امارات کی ترجیح کورونا کے دوران بے روزگار ہونے والی ورک فورس کی بحالی ہے جب کہ یو اے نے انتہائی پروفیشنل پاکستانی لیبر کیلئے گولڈن ویزا کی سہولت بھی دی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں