کورونا وائرس نے اپنی شکل تبدیل کرلی، ڈاکٹروں نے شہریوں کیلئے خطرے کی گھنٹی بجادی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) کورونا کی دوسری لہر نے شہریوں کو اپنا نشانہ بنانا شروع کر دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے ڈاکٹر شازلی منظور نے شہریوں کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی ۔ انہوں نے کہا کہ کورونا دوسری لہر تیزی سے پھیل رہی ہے جو کہ خطرناک ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ کورنا دوسری لہر میں اپنی علامات تبدیل کر رہا ہے۔ڈاکٹر شازلی نے کہا کہ کورونا وائرس اپنی شکل کو تبدیل کر رہا ہے جس کی علامات کا پتہ نہیں چلتا، وائرس اپنی شکل تبدیل کرے گا تواپنی علامات بھی تبدیل کرے گا۔ ڈاکٹرشازلی منظور کا کہنا تھا کہ کورونا وبا کی

دوسری لہر میں ہر عمر کا شخص متاثر ہو رہا ہے، وبا کی دوسری لہر آچکی ہے جس میں لوگوں کواحتیاط زیادہ کرنا ہوگی ورنہ یہ پہلے سے بھی زیادہ پھیل جائے گا۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس اپنی شکل کوتبدیل کررہا ہےجس کی علامات کاپتہ نہیں چلتا۔ ڈاکٹر نے خبردار کیا کہ کورونا وائرس خطرناک ہوتا جا رہا ہے، یورپ میں تباہی مچارہا ہے، کورونا کی پہلی لہرمیں لوگ 2،2 دن میں بھی ٹھیک ہوئے، زیادہ سے زیادہ لوگ چار پانچ دنوں میں ٹھیک ہو کر گھر چلے جاتے تھے لیکن دوسری لہرمیں ہمارے پاس مریض 2 ہفتے بھی رہتے ہیں جس سے پتہ چلتا ہے کہ کورونا کی دوسری لہر کافی پریشان کُن ہے۔اس دوسری لہر میں کُنبے کے کُنبے اس وائرس کا شکار ہو رہے ہیں۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری کیے گئے اعدادوشمار کے مطابق 3ہزار 113نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور متاثرہ افراد کی کل تعداد 3لاکھ89ہزار311 ہوگئی ہے۔پاکستان میں کورونا کے3لاکھ 35ہزار881 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں اور 45ہزار 533 زیر علاج ہیں۔اسلام آباد میں کورونا کیسز کی تعداد28 ہزار980، خیبرپختونخوا46 ہزار281، سندھ ایک لاکھ 68 ہزار783، پنجاب ایک لاکھ 17 ہزار160، بلوچستان 17 ہزار8، آزاد کشمیرمیں6ہزار501 اور گلگت بلتستان میں 4 ہزار 598 افراد کورونا سے متاثر ہوچکے ہیں۔کورونا کے سبب سب سے زیادہ اموات پنجاب میں ہوئی ہیں جہاں 2 ہزار945افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔ سندھ میں 2 ہزار885، خیبر پختونخوا ایک ہزار346، اسلام آباد305، گلگت بلتستان96، بلوچستان میں 165 اور آزاد کشمیر میں155 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں