پاکستان میں گندم کی قیمت تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)پاکستان کی تاریخ میں گندم کی قیمت بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ، پہلی بار دیسی گندم 24سو روپے من ہو گئی ہے۔گزشتہ سال دسمبر میں جب دیسی گندم 2ہزار روپے من تک فروخت ہونا شروع ہوئی تو پورے ملک میں سنگین بحران پیدا ہو گیا مگر امسال دسمبر تو دور کی بات 5اکتوبر کو ہی ملکی گندم 24سو روپے من تک جا پہنچی ہے۔ اس سال ملک میں حالیہ دنوں میں ہی گندم کے بحران کی کیفیت پیدا ہوچکی ہے ، جس سے آٹا بھی مہنگا فروخت ہو رہا ہے ، آٹا مہنگا ہونے سے روٹی اور نان کی قیمتیں بھی بڑھ گئی ہیں، جس وجہ سے دو وقت کی روٹی عام آدمی کی پہنچ سے دور ہوگئی ہے ، اس صورتحال میں عوام کی طرف سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ حکومت فوری طور پر ملک میں گندم کی

بحرانی کیفیت کو دور کرنے اور قیمتوں کو نیچے لانے کے لیے بروقت اقدامات کیے جائیں ۔دوسری طرف ملک میں گندم بحران کے باعث ای سی سی نے گندم درآمد کرنے کی منظوری دے دی ہے ، ای سی سی اجلاس میں روس سے ایک لاکھ 80 ہزار میٹرک ٹن گندم درآمد کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے ، بتایا گیا ہے کہ روس سے گندم حکومت سے حکومت کی سطح پر درآمد کی جائے گی ، روس سے درآمد کی جانے والی گندم پر تمام ڈیوٹیز اور ٹیکس نافذ نہیں کیا جائے گا ، 4 لاکھ 30 ہزار میٹرک ٹن گندم نجی شعبے کے ذریعے پہلے ہی درآمد کی جاچکی ہے، جب کہ اس وقت ملک میں 50 لاکھ ٹن گندم سرکاری ذخائر میں موجود ہے ، دسمبر 2020ء کے آخر تک مزید 1.1 میٹرک ٹن گندم درآمد کرنے کی توقع کی جارہی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں