پشاور یونیورسٹی میں طالبات کے سامنے نازیبا حرکتیں کرنے والاشخص گرفتار

پشاور (نیوزڈیسک) پولیس نے پشاور یونیوسٹی میں طالبات کو ہراساں کرنے والے ایک شخص کو گرفتار کیا ہے، سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو ملزم کی گرفتاری کا سبب بنی۔تفصیلات کے مطابق پشاور یونیوسٹی میں طالبات کو ہراساں کرنے والے ایک شخص کو گرفتار کیا گیا ہے، کیمپس پولیس نے انعام کو گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی۔اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ کچھ روز قبل سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی ویڈیو میں ایک شخص مبینہ طالبات کو نازیبا اشارے کرکے ہراساں کررہا تھا، ویڈیووائرل ہونے کے بعد عوامی حلقوں نے سوشل میڈیا پر انتظامیہ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

دوسری جانب یونیورسٹی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی مذکورہ ویڈیو ایک سال پرانی ہے، یونیورسٹی میں ایسی کوئی حرکت برداشت نہیں کی جائے گی۔واضح رہے کہ پشاور یونیورسٹی میں یہ باریش شخص کئی بار طالبات کو ہراساں کرنے میں ملوث پایا گیا ہے۔ سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی تصاویر میں ایک ہی شخص کو مختلف مقامات پر دیکھا گیا ہے۔اس شخص کے بارے میں کہا گیا ہے کہ یہ طالبات کو دیکھ کر سرعام خود لذتی کرتا ہے اور بعض اوقات طالبات کو چھونے کی کوشش بھی کرتا ہے۔ یہ شخص پشاور یونیورسٹی ٹیچرز ایسوسی ایشن ہال کے قریب "وارداتیں” سرانجام دیتا ہے ۔ چونکہ یہ یونیورسٹی کا ایک قدرے غیرگنجان آباد علاقہ ہے تو اس لیے اسے پکڑے جانے کا خوف نہیں ہوتا۔یاد رہے کہ اس سے قبل رواں سال فروری میں سندھ یونیورسٹی جامشورو میں بس ڈرائیور کی جانب سے مبینہ طور پر طالبہ کو ہراساں کرنے کا واقعہ پیش آیا تھا.جس پر اعلیٰ حکام نے نوٹس لے کر فوری رپورٹ بھی طلب کی تھی جبکہ یونیورسٹی کے محکمۂ ٹرانسپورٹ کے انچارج رحمت اللہ شر نے بس ڈرائیور کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں