لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ، حمزہ شہباز نے قانونی و آئینی معاملات دیکھنے کے لیے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا

لاہور (نیوز ڈیسک) لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد وزیر اعلی اور وزیراعظم دونوں نے ہنگامی اجلاس طلب کر لیے۔تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے قانونی و آئینی معاملات دیکھنے کے لیے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا۔ مسلم لیگ ن کے سینیئر رہنما اجلاس میں شرکت کریں گے۔تمام حکومتی ایم پی ایز کو ایوان اقبال پہنچنے کی ہدایت کی گئی ہے۔وزیراعظم شہباز شریف نے بھی ڈھائی بجے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے۔اجلاس میں لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے سے متعلق معاملات زیر غور آئیں گے۔خیال رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے وزیر اعلی کے الیکشن کے خلاف پاکستان تحریک انصاف کی اپیل پر سماعت ہوئی۔

لاہور ہائیکورٹ نے وزیر اعلی پنجاب حمزہ شہباز کے الیکشن کے خلاف پاکستان تحریک انصاف کی درخواست منظور کر لی ہیں۔پی ٹی آئی کی اپیلوں پر جسٹس صداقت علی خان کی سربراہی میں پانچ رکنی بینچ نے سماعت کی۔ حمزہ شہباز کے بطور وزیراعلی پنجاب انتخاب اور سنگل بینچ کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی گئی تھی جس پر گزشتہ روز فیصلہ محفوظ کیا گیا تھا۔لاہور ہائیکورٹ نے 4 ایک کی بنیاد پر درخواستوں پر فیصلہ سنایا۔ لاہور ہائی کورٹ نے پاکستان تحریک انصاف کی درخواست منظور کر لی ہیں۔وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز شریف کا انتخاب کالعدم قرار دے دیا گیا ہے۔ لاہور ہائیکورٹ نے وزیر اعلی پنجاب حمزہ شہباز شریف کا انتخاب کالعدم قرار دے دیا ہے۔پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ڈاکٹر شہباز گل نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اللہ کے فیصلے ہوتے ہیں آج پھر عثمان بزدار وزیر اعلیٰ ہوں گے۔ 25 لوٹے خرید کر حمزہ شہباز کو وزیراعلیٰ بنایا گیا تھا۔ ہمارے ساتھ ناانصافی کی گئی ہے فیصلہ فوری آنا چاہیے تھا۔25 مئی کو جو ہمارے ساتھ ہوا وہ ایسی جعلی وزیر اعلی نے کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں