اختلافات ختم ، جلیل احمد شرقپوری ایک بار پھر مسلم لیگ ن کے ہوگئے

لاہور (نیوز ڈیسک)مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی جلیل احمد شرقپوری نے پارٹی سے اختلافات ختم کردیے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز سے مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب سمبلی جلیل احمد شرقپوری نے ملاقات کی ، ملاقات میں جلیل احمد شرقپوری نے وزیر اعلیٰ پنجاب کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ، اس موقع پر انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن میری جماعت ہے اور میں پارٹی کے ساتھ کھڑا ہوں۔یہاں قابل ذکر بات یہ ہے کہ تحریک انصاف کے دور حکومت میں رکن پنجاب اسمبلی جلیل احمد شرقپوری کے مسلم لیگ ن سے اختلافات چلے آرہے تھے اور انہوں نے اس

وقت کے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی حمایت کی تھی اور ان سے وقتاً فوقتاً ملاقاتیں بھی کرتے رہے اور پی ٹی آئی کے حق میں بتانات دیے ، جس کے بعد چند روز قبل یہ خبر آئی تھی کہ پاکستان مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی جلیل شرقپوری نے پنجاب اسمبلی کی رکنیت سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے ، جلیل شرقپوری پی ٹی آئی میں شمولیت کا اعلان کریں گے ، جلیل شرقپوری پی ٹی آئی قیادت کیساتھ پریس کانفرنس میں استعفے کا اعلان کریں گے۔تاہم پنجاب اسمبلی کی رکنیت سے استعفیٰ دینے کے حوالے سے چلنے والی خبروں پر موقف دیتے ہوئے رکن پنجاب اسمبلی جلیل شرقپوری کا کہنا تھا کہ اسمبلی رکنیت سے استعفیٰ نہیں دے رہا ، میرے استعفے سے متعلق خبروں میں کوئی صداقت نہیں ، ن لیگ کے ٹکٹ سے الیکشن جیتا اور ن لیگ کا حصہ ہوں تاہم پارٹی کی پالیسیوں پر اختلاف جمہوری حق ہے۔ ادھرمسلم لیگ ن نے دعویٰ کیا تھا کہ پانچوں منحرف اراکین واپس آ چکے ہیں تاہم مسلم لیگ (ن) کے منحرف رکن پنجاب اسمبلی فیصل نیازی نے استعفیٰ سپیکر کو دے دیا تھا ، ن لیگ پنجاب کی سیکرٹری اطلاعات عظمی بخاری نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ رکن پنجاب اسمبلی فیصل نیازی نے ن لیگ کی رکنیت سے استعفیٰ دیا ، فیصل نیازی نے استعفی اپوزیشن لیڈرکے چیمبر میں بیٹھ کر لکھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں