پی ٹی آئی کی حکومت سے پہلے آئی ایم ایف کا قرضہ ایک سو ارب ڈالر تھا، فضل الرحمن

جیکب آباد( نیوز ڈیسک)جمعیت علماء اسلام کے سربراہ اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے صدر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی کی حکومت سے پہلے آئی ایم ایف کا قرضہ ایک سو ارب ڈالر تھا جبکہ پی ٹی آئی حکومت نے 900ارب ڈالر قرض لیا، پاکستان کی 70 سالہ تاریخ میں اتنا قرضہ نہیں لیا گیا جتنا 4سال میں حاصل کرکے ملک اور معیشت کو تباہ کردیا۔ان خیالات کا اظہار جے یو آئی ضلع جیکب آباد کے امیر ڈاکٹر اے جی انصاری کی قیادت میں ملاقات کرنے والے وفد سے بات چیت اور اندرون سندھ تین روزہ دورے کے دوران باب الاسلام کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے جاتے جاتے بارودی سرنگیں بچھادیں ہم نے ان کو چیلنج سمجھ کر قبول کیا،

عوام مطمئن رہے جلد حالات پر کنٹرول حاصل کر لیں گے اورمشکل حالات سے نکل جائیں گے۔مولانا فضل الرحمن نے مزید کہا کہ عمران خان نے چین سے کئے ہوئے خفیہ معاہدے کاراز فاش کرکے ملکی معیشت کو تباہ کردیا اور سی پیک بند کردیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی نظام چلانے کے لیے روحانی اور مادی ضرورت ہے جو جے یو آئی کے پاس ہے مقصد اللہ تعالیٰ کے دین اور رسول اللہ ﷺ کے نظام کو نافذ کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو گرانے والے کو جانتے ہیں کہ وہ کس کے ایجنڈے پر مسلط کیے گئے ، سربراہ جے یوآئی نے کہا کہ اگر گھر کی دیوار گر جائے تو گھر کو نہیں گرائیں گے لیکن عمران خان نے ایک ایجنڈے کے تحت ملک کو تباہ کردیا جلد ملک اورعوام کو مسائل کے دلدل سے نکال لیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں