بجلی کا شارٹ فال 6 ہزار 865 میگاواٹ تک پہنچ گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) ملک کے مختلف علاقوں میں 14 گھنٹے تک کی لوڈشیڈنگ جاری ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ملک میں بجلی کا شارٹ فال 6 ہزار 865 میگاواٹ ہے۔ملک میں بجلی کی طلب 26 ہزار میگاواٹ ہے جبکہ بجلی کی مجموعی پیداوار 19 ہزار 135 میگاواٹ ہے۔ذرائع پاور ڈویژن کے مطابق پانی سے 4 ہزار 622 میگاواٹ بجلی پیدا کی جارہی ہے جبکہ سرکاری تھرمل پلانٹس ایک ہزار 134میگاواٹ بجلی پیدا کررہے ہیں۔دوسری جانب نیپرا نے بجلی کے بنیادی ٹیرف میں 7 روپے 91پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی،

بجلی کا ٹیرف بڑھنے کی بنیادی وجہ روپے کی قدر میں کمی ہے، بجلی کی قیمت میں اضافے کے بعد فی یونٹ 24 روپے82 پیسے کا ہوجائے گا،بجلی کی نئی قیمتوں کا اطلاق یکم جولائی سے ہوگا۔جیو نیوز کے مطابق نیپرانے بجلی کے بنیادی ٹیرف میں 7 روپے 91 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی ہے، بجلی کا بنیادی ٹیرف اس وقت 16روپے 91 پیسے فی یونٹ چارج کیا جارہا ہے، جبکہ اس ٹیرف میں مزید اضافے کی منظوری دے دی گئی ہے، نیپرا نے اپنا یہ فیصلہ وزارت توانائی کو بھجوا دیا ہے، وزرات توانائی پر لازم ہوگا کہ نئی قیمتوں پر صارفین کو سبسڈی دینے سے متعلق ایک مہینے میں فیصلہ کرے۔گر وہ فیصلہ نہیں کرتی تو نیا بنیادی ٹیرف تمام صارفین پر لاگو ہوجائے گا، اس وقت بجلی کا بنیادی ٹیرف 16روپے 91 پیسے ہے جو کہ اضافے کے بعد بڑھ کر24 روپے82 پیسے فی یونٹ ہوجائے گا۔ بجلی کی نئی قیمتوں کا اطلاق یکم جولائی سے ہوگا، پاورڈویژن اس حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کرے گی۔ اس سے قبل یکم جولائی سے بجلی کی قیمت میں 8 روپے فی یونٹ تک مزید اضافے کا بھی امکان بتایا گیا تھا کہ بجلی کی قیمت میں اضافہ بنیادی ٹیرف کی مد میں کیا جائے گا ، فیول پرائسز، مہنگا ڈالر، گردشی قرضہ اور کمپنیوں کے نقصانات کے سبب بجلی مہنگی ہو گی ،

بجلی کی قیمتوں میں اضافہ یکمشت نہیں مرحلہ وار ہو سکتا ہے۔دوسری جانب بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں نے تیسری سہ ماہی کی ایڈجسٹمنٹ کے لیے نیپرا میں درخواست دائر کی ہے، بجلی تقسیم کار کمپنیوں کی درخواست پر سماعت 15 جون کو ہوگی۔ ٹیسکو نے 4 ارب 34 کروڑ روپے وصول کرنے کی درخواست کی ہے، پیسکو نے 2 ارب 7 کروڑ، گیپکو کی 1 ارب 97 کروڑ روپے، آئیسکو نے ایک ارب روپے، میپکو نے ایک ارب 80 کروڑ روپے اور حیسکو نے 1 ارب 91 کروڑ روپے کی ایڈجسٹمنٹ مانگی ہے۔دو روز قبل نیپرا نے بجلی کی قیمت میں 3روپے99 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں