فضل الرحمن کا صدر بننا نیک شگون ہو گا،مفتی کفایت اللہ

لاہور(نیوز ڈیسک) جمعیت علماء اسلام ف کے رہنما مفتی کفایت اللہ کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمن کا صدر بننا نیک شگون ہو گا۔ مفتی کفایت اللہ نے سیاسی صورتحال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ایک جمہوری عمل کے ذریعے انہیں ہٹایا ، ہمارے پتے ٹھیک استعمال ہوئے۔میرے خیال سے پاکستان تحریک انصاف کو استعفے آخری پتے کے طور پر استعمال کرنے چاہئیے تھے۔مفتی کفایت اللہ نے مزید کہا کہ اسرائیل کو تسلیم نہیں کریں گے جو پہلے موقف تھا وہی آج ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اگر مولانا فضل الرحمن صدر بن جاتے ہیں تو قوم کے لیے نیک شگون ہے، ان کی زیر نگرانی تمام سیاسی

جماعتوں کے لیے دیانتدار ہو گا کوئی انگلی نہیں اٹھائے گا۔دوسری جانب امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ اسرائیل کو تسلیم کرنے کے خلاف ہر حد تک جانے کے لے تیار ہے ،حکومت حرمت سو د کے حوالے سے عدالتی فیصلے پر عمل درآمد یقینی بنا ئے عمران خان احتجاج سے پہلے پختون خواہ میں اپنے 9سالہ کار کرد گی کا جواب دے ،انتخابی اصلا حات کرکے فوری طو ر پر نئے انتخابات کا اعلان یقینی بنا یا جا ئے ، اپنے خطاب میں سراج الحق کا کہنا تھا کہ پیٹرولیم مصنوعات میں یکدم 30روپے فی لیٹر اضافے نے غر یب عوام پر مہنگا ئی بم گرادیا ہے ،جس سے مہنگا ئی کا نیا سونا می آئیگا ،انہوں نے کہا کہ کہ تینوں بڑی سیاسی جماعتوں پی ٹی ائی ، ن لیگ ، پی پی پی نے عوام کو مایوس کیا اور ان کی ناقص پالیسوں کی وجہ ملک دلدل میں پھنس چکا ہے مذکورہ سیاسی جماعتوں نے ملک کو 53ہزار ارب ڈالرز کا مقروض بناکر عوام کو مشکلات سے دوچار کر دیا ہے جما عت اسلامی نے 3جون کو منصورہ میں مرکزی شوریٰ کا اجلاس طلب کیا ہے جس میں ملک کی سیاسی صورت حال اور ائندہ کا لائحہ عمل بے کیا جا ئیگا موجودہ حکومت چل نہیں سکتا ہے الیکشن ریفارمز کے بعد الیکشن کی جانب جانا چاہئے حکومت سود فری بجٹ پیش کریں الحق نے کہا کہ موجودہ اور سابقہ حکومتوں میں کوئی فرق نہیں ہے تمام حکومتوں نے ورلڈ بینک اور ائی ایم ایف کے ہاتھوں قوم کو مقروض بنا یا سٹیٹ بینک کو ائی ایم ایف اور کشمیر کو بھارت کے حوالہ کر دیا عمران خان اور پی ڈی ایم دونوں نے جلسے جلوسوں پر توجہ مرکوز کرکے عوام کے مسائل مشکلات کا ان کے ساتھ کوئی احساس نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں