پولیس نے ڈاکٹر یاسمین راشد کی گاڑی پر دھاوا بول دیا، ونڈ سکرین ٹوٹ گئی

لاہور (نیوز ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد اور پولیس اہلکاروں کے درمیان تلخ کلامی کی ویڈیو سامنے آ گئی۔ لاٹھی چارج سے یاسمین راشد کی گاڑی کی ونڈ سکرین ٹوٹ گئی۔یاسمین راشد کی گاڑی کو روکنے کی کوشش کی گئی تھی اس دوران ان کی گاڑی پر بھی حملہ کیا گیا تھا۔ڈاکٹر یاسمین راشد کی گاڑی پولیس کا حصار توڑنے میں کامیاب ہو گئی۔ذرائع کے مطابق ڈاکٹر یاسمین راشد کا قافلہ شیلنگ والے علاقے سے نکلنے میں کامیاب ہو گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی رہنما یاسمین راشد شیلنگ سے متاثر ہوئیں،یاسمین راشد نے بتی چوک پر گاڑی روک کر پانی سے آنکھیں دھوئیں۔

ڈاکٹر یاسین راشد کا کہنا ہے کہ پولیس نے گھسیٹ کر گاڑی سے باہر نکالنے کی کوشش کی۔انہوں نے کہا کہ میری گاڑی کے شیشے توڑے گئے، میرا ہاتھ بھی زخمی ہو گیا ہے۔پولیس نے مجھے گرفتار کرنے کی کوشش کی۔دوسری جانب پولیس نے بتی چوک سے پاکستان تحریک انصاف کے متعدد کارکنان کو گرفتار کر لیا ہے۔جس کے بعد بتی چوک پر پہنچنے والے پی ٹی آئی کارکنان کی تعداد کم ہو گئی ہے۔ بتی چوک پر پولیس کی شیلنگ کے بعد علاقہ میدانِ جنگ کی شکل اختیار کر چکا۔پولیس کی جانب سے کارکنان کو منتشر کرنے کے لیے آںسو گیس اور شیلنگ کی گئی۔یادگار چوک کے قریب بھی پولیس کی جانب سے کارکنان پر شیلنگ کی گئی۔یہ بھی خبریں سامنے آ رہی ہیں کہ پاکستان تحریک انصاف کے کارکنان رکاوٹیں ہٹا کر آگے بڑھ رہے ہیں۔شیلنگ کے باوجود پی ٹی آئی کارکنان آگے بڑھ رہے ہیں۔علاوہ ازیں پی ٹی آئی رہنما یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکاروں نے ہم سے تلخ کلامی کی اور بدتمیزی کی۔ انہوں نے کہا کہ مارچ ہر صورت کامیاب ہو گا اور ہم اسلام آباد پہنچ کر رہیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں