حکومت کا پی ٹی آئی کو لانگ مارچ کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )حکومت نے تحریک انصاف کو لانگ مارچ کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ کرلیا ۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ کابینہ نے فیصلہ کیا ہے فتنہ اور فساد پھیلانے کی اجازت نہیں دی جارہی ، جو جتھہ اسلام آباد پر حملہ آور ہونے آرہا ہے اس کو اجازت نہیں دی جاسکتی ، اس فتنے کو یہیں پرروکاجائے گا۔انہوں نے کہا کہ آئین اور قانون پرعمل کیاجائےگا، پی ٹی آئی حکومت آئینی عمل کےذریعے ہٹائی گئی، شہبازشریف ملک کےوزیراعظم ہیں،

عمران خان اس آئینی عمل کوبھی تسلیم نہیں کررہے ، عمران خان نےحکومت کو ہٹانے پر دباو ڈالنے کے لیے مارچ کا اعلان کیا، جس لانگ مارچ کی بات کی جارہی ہےاس کوخونی مارچ کہہ رہےہیں، ماضی میں پی ٹی آئی نے جو دھرنا دیاوہ انتشار کےسوا کچھ نہیں تھا، اس لیے کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ مارچ کی اجازت نہیں دی جارہی۔وزیر داخلہ نے کہا کہ پی ٹی آئی والے گالیوں سےگولیوں پرآگئےہیں، گزشت رات پولیس اہلکار جاں بحق ہوا، پی ٹی آئی کی لیڈرشپ پشاورمیں ہے، عمرانی فتنے والوں کوخبردار کرناچاہتاہوں یہ قومی مسئلہ ہے، عمران خان نےپارٹی کے لوگوں کوکہامخالف پارٹی کوچور یا غدارکہیں، اتحادی حکومت،ایک طبقے یاسیاسی جماعت کامعاملہ نہیں۔ مسلم لیگ ن کے رہنماء نے کہا کہ جمہوری،پرامن احتجاج،سب کا حق ہے لیکن یہ پرامن احتجاج کےلیے نہیں آرہے، اگر یہ اسےخونی احتجاج کانام نہ دیتے توہم راستے میں حائل نہ ہوتے ۔ادھر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ریڈ زون کی سکیورٹی کے لیے فوج طلب کرلی گئی ، جیو نیوز کے مطابق وزارت داخلہ کی جانب سے ریڈ زون کی سکیورٹی کے لیے فوج کو طلب کیا گیا ہے ، ریڈ زون کی تمام سکیورٹی فوج کے حوالے کی جائے گی جس کے تحت وزیراعظم ہاؤس ، وزیر اعظم آفس، ایوان صدر اور سپریم کورٹ پرفوج تعینات ہوگی اس کے علاوہ کابینہ ڈویژن سمیت دیگر سرکاری عمارتوں پر بھی فوج کو تعینات کیا جائے گا ۔علاوہ ازیں اسلام آباد میں بھی دفعہ 144 نافذ کردی گئی ، جس کے تحت اسلام آباد میں دو ماہ کیلیے دفعہ 144 نافذ کیے جانے کے بعد 4 سے زیادہ افراد اکھٹے نہیں ہو سکتے ، یہ پابندی 2 ماہ کے لیے لگائی گئی ہے ، جس کا نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔ اسی طرح پنجاب حکومت نے بھی صوبہ بھر میں دفعہ 144 نافذ کرنے کا اعلان کر دیا ہے ، مسلم لیگ ن کے رہنما عطا تارڑ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں دفعہ 144 نافذ کی جا رہی ہے ، دفعہ 144 کے نفاذ کا فیصلہ اتحادی جماعتوں سے مشارت کے بعد کیا گیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں