مرد پولیس اہلکار میری والدہ کو اٹھا کر لے کر گئے،ایمان مزاری

اسلام اباد (نیوز ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کی رہنماء شیریں مزاری کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔رہنما تحریک انصاف شیریں مزاری کی بیٹی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ٹویٹ کر ذریعے گرفتاری کی تصدیق کی ہے۔ایمان زینب نےکہا ہے کہ مرد پولیس اہلکار میری والدہ کو اٹھا کر لے کر گئے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ گرفتار کرنے والوں نے خود کواینٹی کرپشن پولیس اہلکار ظاہر کیا ہے۔

خیال رہے کہ خیال رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی رہنماء اور سابق وفاقی وزیر ڈاکٹر شیریں مزاری کو گرفتار کرلیا گیا ، اس ضمن مین پی ٹی آئی رہنماء افتخار درانی نے ٹویٹ کیا کہ شیریں مزاری کو ان کے گھر کے باہر سے اٹھا لیا گیا ، سب کارکن کوہسار پولیس اسٹیشن پہنچیں۔بتایا گیا ہے کہ ڈاکٹر شیریں مزاری کو ڈیرہ غازی خان میں مقدمہ درج ہونے پر گرفتار کیا گیا اور سابق وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق کو اسلام آباد میں ان کی رہائش گا ہ سے اینٹی کرپشن ڈیرہ غازی خان کی ٹیم نے گرفتار کیا جب کہ شیریں مزاری کی گرفتاری کے وقت اینٹی کرپشن کی ٹیم کو مزاحمت کا بھی سامنا کرنا پڑا ۔اس حوالے سے تحریک انصاف کی رہنماء ڈاکٹر شیریں مزاری کی صاحبزادی ایمان مزاری نے کہا ہے کہ مرد پولیس اہلکار میری ماں کو گسیٹتے ہوئے ساتھ لے گئے ہیں ، مجھے صرف اتنا بتایا گیا ہے کہ میری والدہ کو اینٹی کرپشن ونگ لاہور لے جایا گیا ہے۔تحریک انساف کے رہنماء اور سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امپورٹڈ حکومت گھبرا گئی ہے ، سانحہ ماڈل ٹاون میں ملوث ملزم ملک میں انارکی پھیلانا چاہتے ہیں ، تحریک انصاف اس طرح کے اوچھے ہتھکنڈوں سے گھبرانے والی نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں