اوورسیز پاکستانی تو حکومت سے بہت خوش ہیں، غریدہ فاروقی

اسلام آباد( نیوز ڈیسک) گزشتہ دور حکومت میں امریکی کرنسی ڈالر کا ریٹ بڑھنے پر تنقید کرنے والے اس وقت نئی نئی توجیہات پیش کرتے نظر آرہے ہیں ، ایسا ہی ایک ٹویٹ اینکرپرسن غریدہ فاروقی کا بھی سامنے آیا ۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے خیالات کا ظہار کرتے ہوئے خاتون صحافی نے لکھا کہ اوور سیز پاکستانی تو وزیر اعظم شہباز شریف کی حکومت سے بہت خوش ہیں اور وہ کہتے ہیں کہ ووٹ کا حق ملے یا نہ ملے ڈالر کے بدلے نوٹ تو مل رہے ہیں ۔ غریدہ فاروقی کا کہنا ہے کہ اسی لیے سمندر پار پاکستانیوں نے شہباز شریف کے دور حکومت کے

ایک ماہ میں عمران خان دور سے بھی زیادہ اور تاریخی زرِمبادلہ پاکستان بھیجا ہے۔خیال رہے کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر نے ڈبل سینچری مکمل کر لی کیوں کہ پاکستانی روپے کے مقابلے میں ڈالر نے بلندیوں کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا ہے اور ڈالر اوپن مارکیٹ میں 2 روپے مہنگا ہو کر 200 روپے کا ہو گیا جب کہ انٹربینک میں ڈالر 1 روپے 68 پیسے مہنگا ہوا اور یوں انٹربینک میں ڈالر 197.66 روپے کا ہو گیا ۔اس حوالے سے ماہر معاشیات اور سابق ترجمان وزارت خزانہ مزمل اسلم کا کہنا ہے کہ اس وقت ڈالر کی قیمت 180 سے نیچے ہونی چاہئیے تھی لیکن ملک میں عدم استحکام کی وجہ سے ڈالر کی قدر بڑھی ، فیصلہ سازی نہ ہونے سے زرِ مبادلہ جا رہا ہے مگر ملک میں نہیں آ رہا اور ڈالر مہنگا ہونے سے مہنگائی کا طوفان آئے گا ۔ دوسری طرف پاکستان کے چیف اکانومسٹ ڈاکٹر زبیر خان عہدے سے مستعفی ہو گئے ، پاکستان تحریک انصاف نے حکومت کی طرف سے سرکاری اعداد و شمار میں ہیر پھیر کو ڈاکٹر زبیر خان کے مستعفی ہونے کی وجہ قرار دے دیا ، اس حوالے سے پی ٹی ائی رہنماء اور سابق وفاقی وزیر حماد اظہار نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے اپنے اشتہاروں کی طرح سرکاری اعدار و شمار میں بھی جھوٹ بولنے کی کوشش کی ، اس کے نتیجے میں پاکستان کے جیف اکانامسٹ ڈاکٹر زبیر خان نے اپنے منصب سے استعفی دے دیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں