حقیقی آزادی اور خودمختاری کے حصول تک چین سے نہیں بیٹھیں گے، عمران خان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین سابق وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حقیقی آزادی اور خودمختاری کے حصول تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ، جس کے لیے رواں ماہ کے آخر میں اسلام آباد کی جانب ’غلامی نامنظور مارچ‘ کا فیصلہ کیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق اپنے ایک بیان میں انہوں نے قوم کو ماہِ صیام کی تکمیل اور عید الفطر کی مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ اللہ کی نعمتوں میں سے فکر و عمل کی آزادی سب سے بڑی نعمت ہے ، آزادی کی قدر ان کو ہوتی ہے جنہیں غلامی جیسی ذلت کا سامنا رہتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ 1947ء میں رمضان کی27 ویں شب

غلامی کی زنجیروں جکڑی قوم کو آزادی ملی ، سامراج آزادی کے بعد بھی ہم پر بالواسطہ غلامی کے سائے کیے رکھنے پر بضد رہا اور 7مارچ کو امریکہ میں پاکستانی سفیر کی جانب سے دفترِ خارجہ کو ایک مراسلہ موصول ہوا ، اس مراسلے میں امریکی حکام کی ہمارے سفارتی عملے سے باضابطہ ملاقات کا احوال درج تھا ، مراسلے کے مندرجات میرے سامنے رکھے گئے تو میں حیرت زدہ رہ گیا کہ امریکہ کس قدر ڈھٹائی سے پاکستان کی اندرونی سیاست میں کھلی مداخلت کررہا ہے۔چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ امریکا وزیراعظم کو ہٹانے کا حکم اور نہ ہٹانے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتا ہے ، سیاسی دشمن مل کر قومی اسمبلی میں منتخب وزیراعظم کے خلاف عدمِ اعتماد کی تحریک لائے اور ڈپٹی سپیکر کی رولنگ کے باوجود حکومت کاتختہ الٹ دیا گیا۔ انہوں نے کہا ہے کہ سازش کا واحد مقصد پاکستان کو غلامی کی ڈگر پر چلانا اور اس حکومت کو سزا دینا تھا ، حکومت قوم کے مفادات کو ایک آزاد خارجہ پالیسی کا مرکز بنانے کی جسارت کررہی تھی ، غلامی کا طوق گلے میں ڈال کرعروج و ترقی کی راہ پر کبھی گامزن نہیں ہوسکتے ، پاکستان کا وقار اس مطلق آزادی و خودمختاری ہی سے وابستہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں