وزیراعظم کا وزیراعلیٰ پنجاب کوتبدیل کرنے کا فیصلہ، میڈیا رپورٹس پر حکومتی ردعمل آ گیا

لاہور(نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر لاہور پہنچ گئے ہیں۔میڈیا رپورٹس میں دعویٰ کیا جارہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے ملک میں بدلتی ہوئی سیاسی صورتحال کے پیش نظر وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کی تبدیلی کا فیصلہ کیا ہے۔وزیر اعلی عثمان بزدار کی جگہ کون ان کی جگہ لے گا اس حوالے سے کمیٹی بھی بنادی گئی ہے۔معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل کا کہنا ہے کہ ابھی وزیراعلی پنجاب کی تبدیلی زیرغور نہیں۔شہباز گل نے فی الحال وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کی تبدیلی کی خبروں کی تردید کی ہے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب کے حوالے سے ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔

تاہم میڈیا رپورٹس میں یہ دعوی کیا جا رہا ہے کہ وزیراعظم پنجاب کی وزارت اعلٰی تبدیل کرنے کا فیصلہ کر چکے ہیں۔دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے وزیراعلیٰ آفس میں 40 سے زائد اراکین اسمبلی نے ملاقاتیں کیں جن میں سیاسی صورتحال اور ترقیاتی منصوبوں پر ہونے والی پیش رفت پر بات چیت کی گئی ، اراکین اسمبلی نے وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کیا ، وزیر اعلی سے ملاقات کرنے والوں میں صوبائی وزراء میاں خالد محمود، اسد کھوکھر، خیال احمد کاسترو، سید سعیدالحسن شاہ، شوکت لالیکا، ہاشم جواں بخت، یاسر ہمایوں، مشیر حنیف پتافی،اراکین پنجاب اسمبلی خرم خان لغاری، احمد شاہ کھگہ، میاں محمد اختر حیات، چوہدری لیاقت علی، سلیم سرور جوڑا، چوہدری امجد محمود چوہدری، افتخار گوندل، فتح خالق بندیال، میجر (ر) محمد لطاسب ستی، سردار احمد علی دریشک، سردار محی الدین کھوسہ، سردارجاوید خان لنڈ، سید سبطین رضا، نذیر چوہان، شکیل شاہد، عمر فاروق، علی اختر، سعید احمد، خرم اعجاز، عمرآفتاب، طلعت نقوی، سیدہ سونیاعلی رضا شاہ، مہندر پال سنگھ اور دیگر شامل تھے- چیف وہپ پنجاب اسمبلی ایم پی اے سید عباس علی شاہ بھی اس موقع پر موجود تھے۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن ملک میں سیاسی انتشار پھیلا رہی ہے ، سیاسی عدم استحکام پیدا کرکے مضبوط ہوتی معیشت کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے ، ہم سب وزیراعظم عمران خان کے سپاہی ہیں اور اپوزیشن کے ہر ہتھکنڈے کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے ،

اپوزیشن کا سیاسی افرتفری پھیلانے کا ایجنڈا عوام کے سامنے ہے ، اپوزیشن کا ساڑھے تین سالہ ریکارڈ ملکی مفادات سے متصادم رہا ہے ، اپوزیشن جماعتوں نے ہر موقع پرمنفی سیاست کے ذریعے قومی مفادات کو نقصان پہنچایا ، پاکستان کے مفاد کے خلاف کام کرنا حب الوطنی نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے ہمیشہ پاکستان کے مفادات کو مقدم رکھا ہے ، اپوزیشن کی منفی سیاست کا مقصد اپنی کرپشن کو بچانا ہے ، پے در پے ناکامیوں کے بعد اپوزیشن کو تحریک عدم اعتماد میں بھی شکست ہوگی ، وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں پی ٹی آئی متحد ہے ، پارٹی میں دراڑیں ڈالنے کی سازش کو مل کر ناکام بنائیں گے ، موجودہ حالات میں نفاق کی سیاست کرنے والوں کے ہاتھ کچھ نہیں آئے گا ، اپوزیشن کے خواب کبھی پورے نہیں ہوں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں