اسلام آباد کے پمز اسپتال میں 13 سالہ بچی کی عصمت دری کا واقعہ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے پمز اسپتال میں 13 سالہ بچی کو مبینہ زیادتی کا نشانہ بنادیا گیا۔اسلام آباد پولیس حکام کے مطابق یہ واقعہ جمعرات کی شام پیش آیا جب 13 سال کی بچی کی والدہ اور نانا کے ساتھ پمز ہسپتال آئی۔ملزم بچی کو رہنمائی کا جھانسہ دے کر گاڑی میں لے گیا اور وہاں سے زیادتی کی۔اسلام آباد پولیس نے مزید بتایا کہ سی سی ٹی وی فوٹیج اور دیگر تحقیقات کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔اسلام آباد پولیس حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ فارنزک کے لیے بچی اور ملزم کے سیمپل لاہور بھیجے جائیں گے۔علاوہ ازیں تھانہ صدر واہ پولیس نے 13سالہ لڑکے سے

زیادتی کی کوشش کرنے والا ملزم چند گھنٹوں میں گرفتار کرلیا۔ تھانہ صدر واہ پولیس کو متاثرہ لڑکے کے والد نے درخواست دی کہ محمد اعجاز نے اس کے 13سالہ بیٹے کو کمرے میں لے جا کر زیادتی کی کوشش کی، جس پر صدر واہ پولیس نے مقدمہ درج کیا، ایس ایچ اوصدر واہ نے اپنی ٹیم کے ہمراہ کاروائی کرتے ہوئے ہیومن انٹیلی جینس کی مدد سے 13سالہ لڑکے سے زیادتی کی کوشش کرنے والے ملزم محمدا عجاز کو چند گھنٹوں میں گرفتا رکرلیا، ایس پی پوٹھوہار نے ملزم کی گرفتاری پر ایس ایچ او صد رواہ اور پولیس ٹیم کوشاباش دیتے ہوئے کہا کہ زیادتی جیسے فعل ناقابل برداشت ہے، ملزم کو قرار واقعی سزادلوانے کے لیے تمام قانونی تقاضے پورے کیے جائیں گے، راولپنڈی پولیس زیادتی کے حوالے سے زیرو ٹالیرنس پالیسی پر عمل پیرا ہے جسے ہر صورت یقینی بنایا جا رہا ہے۔ایک اور واقعے میں ذہنی اور جسمانی معذور لڑکی کو چار ماہ تک زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جو حاملہ ہوگئی پولیس نے مقدمہ درج کرلیا بتایا گیاہے کہ نواحی گائوں چک 40تھری آرمیں (ی)جواں سال لڑکی ذہنی اور جسمانی طور پر معذور ہے جس سے قریبی آبادی کا رہائشی صدیق مسیح ولد جگا مسیح گذشتہ چار ماہ سے زیادتی کا نشانہ بناتا رہا جس سے وہ حاملہ ہوگئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں