بھارتی جنرل بپن راوت نے زخمی حالت میں مقامی افراد سے کیا کہا تھا؟عینی شاہد نے بتادیا

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ روز پیش آنے والے ہیلی کاپٹر واقعے کے ایک عینی شاہد شیو کمار نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے بھارتی جنرل بپن راوت کو پہاڑیوں سے ملبہ ملنے کے بعد زندہ دیکھا۔شیو کمار نے بھارتی میڈیا کو بتایا کہ وہ اپنے بھائی سے ملنے جارہا تھا کہ اسی دوران ہیلی کاپٹر گِر کر تباہ ہوا۔عینی شاہد شیو کمار کا دعویٰ ہے کہ اس نے ایئر فورس کے ہیلی کاپٹر کو آگ میں لپٹے اور گرتے دیکھا جس کے بعد وہ اور دیگر افراد جائے وقوعہ پر پہنچ گئے۔شیو کمار نے بھارتی خبررساں ادارے کو بتایا کہ ہم نے تین لاشیں گرتے ہوئے دیکھی جبکہ ایک آدمی زندہ تھا اور اس نے ہم سے پانی مانگا تھا۔ عینی شاہد نے کہا کہ ہم نے چادر کی مدد سے اس شخص کو ملبے سے باہر نکالا جس

پر اس نے ہم سے پانی مانگا۔شیو کمار نے کہا کہ جس آدمی سے اس نے بات کی تھی وہ جنرل بپن راوت تھا۔ عینی شاہد نے مزید کہا کہ اس حادثے کے بعد وہ ساری رات سو نہیں سکا۔دوسری جانب بھارتی ریاست تامل ناڈو میں فوجی ہیلی کاپٹر گرنے کے واقعے میں ہلاک بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت کی آخری رسومات کل ادا کی جائیں گی۔بھارتی ٹی وی کے مطابق جنرل بپن راوت اور ان کی اہلیہ کی میت ملٹری جہاز سے نئی دہلی لائی جائیں گی، بھارت کے پہلے سی ڈی ایس جنرل بپن راوت کی زندگی کا یہ دوسرا ہیلی کاپٹر حادثہ تھا جو ان کیلئے جان لیوا ثابت ہوا، 6 سال قبل یعنی 2015 میں بھی جنرل بپن راوت ہیلی کاپٹر حادثے میں بال بال بچ گئے تھے، وہ اس وقت لیفٹیننٹ جنرل تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں