بابا گورونانک کا جنم دن منانے پاکستان آنیوالے بھارتی شہری نے اپنی بیوی کی شادی پاکستانی نوجوان سے کروادی

لاہور (نیوز ڈیسک)بھارتی شہری نے اپنی بیوی کی شادی پاکستانی نوجوان سے کروا دی۔تفصیلات کے مطابق پاکستان اور بھارت سے تعلق رکھنے والے گونگے بہرے جوڑے کی محبت کی عجیب داستان سامنے آئی ہے۔بھارت سے گذشتہ دنوں ہزاروں سکھ یاتری بابا گورونانک دیوجی کا جنم دن منانے پاکستان آئے تھے۔ان یاتریوں میں 39 سالہ پرم جیت کور اور ان کے شوہر اشتوش سنگھ بھی شامل تھے۔یہ دونوں گونگے اور بہرے ہیں اور ان کی پاکستان آمد کا مقصد بابا گورونانک دیو جی کے جنم دن کی تقریبات کے علاوہ ایک پاکستانی نوجوان محمد عمران سے ملنا بھی تھا۔محمد عمران راجن پور کا رہائشی

ہے جو اُن دونوں کی طرح گونگا بہرا ہے۔ بھارتی شہری لکھنو سے تعلق رکھنے والے اشتوش سنگھ اپنی 39 سالہ بیوی پرم جیت کور اس کے پاکستانی دوست سے ملوانے کے لیے لاہور لے آیا اور اس کی شادی پاکستانی نوجوان عمران سے کروا دی۔رپورٹ کے مطابق پرم جیت کور کی محمد عمران سے چند سال قبل سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر دوستی ہوئی جو بعدازاں محبت میں بدل گئی۔اور دلچسپ بات یہ ان کے شوہر کو بھی دونوں کی دوستی کا علم تھا۔میاں بیوی 17 نومبر کو واہگہ بارڈر کے زریعے پاکستان آئے اور یہاں گرین ٹاؤن میں قیام کیا،اس دوران عمران سے بھی رابطہ ہوا۔اشتوش سنگھ نے اپنی بیوی کو طلاق دے دی جس کے بعد اس نے اسلام قبول کر لیا اور اپنا نام پروین سلطانہ رکھ لیا۔23 نومبر کو سیشن کورٹ میں قبول اسلام کا بیان حلفی جمع کروانے کے بعد محمد عمران سے نکاح بھی کر لیا۔جب سکھ یاتریوں نے واپس جانا تھا تو پاکستانی شہری بھی پرم جیت اور اشتوش کے ہمراہ تھا تاہم ویزا نہ ہونے کی وجہ سے پاکستانی امیگریشن حکام نے اُسے روک لیا۔تفتیش کے بعد تینوں نے اشاروں سے تفصیلات بتائیں۔سفری دستاویزات نہ ہونے کی وجہ سے محمد عمران کو بھارت جانے کی اجازت نہیں مل سکی۔پروین سلطانہ نے محمد عمران سے وعدہ کیا کہ وہ اسے ملنے اور ہمیشہ اس کے ساتھ رہنے کے لیے پاکستان آئے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں