عوام کو آٹا چینی اور اب پٹرول کیلئے قطاروں میں کھڑا کرنا ظلم کی انتہاء ہے،مریم نواز

لاہور (نیوز ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کی مرکزی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ عوام کو آٹا چینی اور اب پٹرول کیلئے قطاروں میں کھڑا کرنا ظلم کی انتہاء ہے، خلقِ خدا رُل رہی ہے مگرمجال ہے ظالم حکومت کو کوئی فرق پڑے؟ عمران خان کو عوام کی تکلیف پر ایک دن بھی پریشان ہوتے نہیں دیکھا۔ انہوں نے ٹویٹر پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ پاکستان کے عوام کو آٹا چینی اور اب پٹرول کے لیے قطاروں میں کھڑا کر دینا صرف بے حسی اور نااہلی نہیں،ظلم کی انتہا ہے۔انہوں نے کہا کہ خلقِ خدا رُل رہی ہے، تڑپ رہی ہے مگر مجال ہے ظالم حکومت کو کوئی فرق پڑے؟ ایک دن بھی عوام

پر ظلم و قیامت ڈھانے والے عمران خان کو عوام کی تکلیف پر پریشان ہوتے نہیں دیکھا۔ لاہور، اسلام آباد، گوجرانوالہ کی یہ تصاویر صرف پیٹرول کے لیے قطاروں کی نہیں بلکہ عوام کے کرب، تکلیف اور بے بے بسی کی داستان ہے۔میری دعا ہے انھی قطاروں میں عمران خان، اس کو مسلط کرنے والے اور وزرا بھی کھڑے ہوں تاکہ انھیں پتہ چلے کہ عوام پر کیا قیامت ٹوٹی ہے۔دوسری جانب پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی جانب سے ملگ گیر ہڑتال کے اعلان کے باعث پیٹرول پمپس پر طلب میں اضافے کے باعث پیٹرول اور ڈیزل ختم ہوگیا ہے، جس کے باعث شہریوں کو مشکلات کا سامنا ہے، عوام پیٹرول کی تلاش میں رل گئے۔ پبلک ٹرانسپورٹرز نے بھی من مانے کرائے وصول کئے۔ واضح رہے ملک بھر میں تقریبا 9 ہزار 500 پیٹرول پمپس ہیں۔پی ایس او آئل بزنس کا 70 فیصد ہے۔ پی ایس او کے کم و بیش تمام پمپس کھلے ہیں۔ گوکے 1000، شیل، ٹوٹل اور حسکول کے بھی پیٹرول پمپس کھلے ہیں۔ پاکستان آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کی فیول سپلائی بھی جاری ہے۔ پیٹرول پمپس پر گاڑیوں کا رش برقرار ہے۔ منافع کی شرح بڑھوانے کیلئے پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن ہڑتال پر قائم ہے۔ دریں اثناں پیٹرولیم ڈویژن حکام سے تمام بڑی او ایم سی،پی ایس او، ٹوٹل پارکو، شیل کے نمائندوں نے ملاقات کی جس میں او سی اے سی اور ڈیلرز ایسوسی ایشن کے نمائندوں بھی موجود تھے ، پیٹرولیم ڈویڑن نے ڈیلرز مارجن میں اضافے کی تجاویز ای سی سی کو بھجوا دی ہیں۔ترجمان پٹرولیم ڈویژن کے مطابق مارجن میں اضافے کی تمام تفصیل پی آئی ڈی ای کی

غیر جانبدارانہ رپورٹ پر مبنی ہے، ملک بھر میں پیٹرولیم مصنوعات کی کوئی قلت نہیں ،تمام بڑی کمپنیوں کے پیٹرول پمپس پر پیٹرول اور ڈیزل کی سیل دن بھر جاری رہی ۔ ڈیلرز مارجن میں باقاعدگی سے اضافہ کیا جاتا رہا ہے ،اس سال اپریل میں بھی مارجن میں اضافہ کیا گیا ۔ ضابطہ کار کی روشنی میں ڈیلرز ایسوسی ایشن کو ای سی سی اجلاس کا انتظار کرنا چاہیے ،ڈیلرز ایسوسی ایشن عوام کی مشکلات کا احساس کرے ۔ ترجمان کے مطابق ڈیلرز ایسوسی ایشن ملک کے وسیع تر مفاد میں ذمہ داری کا ثبوت دیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں