پاکستان اور خلیجی ملک کے درمیان فیری سروس کے آغاز کا فیصلہ

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان اور خلیجی ملک عمان کے درمیان فیری سروس کے آغاز کا فیصلہ، پاکستان میں تعینات عمانی سفیر سفری سہولت کے جلد آغاز کیلئے پرامید، اکستانی عازمین حج و عمرہ بھی فیری سروس استعمال کر سکیں گے۔ تفصیلات کے مطابق وزیر داخلہ شیخ رشید احمد اور پاکستان میں تعینات عمان کے سفیر محمد عمر احمد المحرون کے درمیان منگل کے روز اہم ملاقات ہوئی۔ملاقات کے دوران دونوں رہنماوں کے درمیانی باہمی دلچسپی کے اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات کے دوران دونوں ممالک کے دوران فیری سروس کے آغاز اور سیاحت کو فروغ دینے کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

عمان کے سفیر نے امید ظاہر کی کہ جلد پاکستان اور عمان کے درمیان فیری سروس کا آغاز ہو جائے گا۔فیری سروس کے آغاز سے پاکستان اور عمان کے درمیان سیاحت اور تجارت کو فروغ ملے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ فیری سروس کی بدولت پاکستانی عمرہ اور حج عازمین بھی سعودی عرب کا سفر کر سکیں گے۔ واضح رہے کہ پاکستان کی جانب سے گزشتہ کچھ عرصے سے فیری سروس کے آغاز کے حوالے سے کوششیں کی جا رہی ہیں، تاہم تاحال کوئی عملی پیش رفت نہیں ہوئی۔ رواں سال جون میں پاکستان نیشنل شپنگ کارپوریشن(پی این ایس سی)نے پرائیویٹ انوسٹرز سے فیری سروس چلانے کیلئے پیشکش طلب کی تھی۔بتایا گیا تھا کہ فیری سروس ملکی بندرگاہوں کے درمیان چلانے کے علاوہ بین الاقوامی روٹس پر بھی چلائی جائے گی اور فیری سروس چلانے کے لیے سرمایہ کاری کرنے والی کمپنیوں کو پی این ایس سی سہولتیں فراہم کرے گی۔ فیری سروس کے ذریعے کراچی سے دبئی سیاحت کے علاقہ ایران اور سعودی عرب زیارت اور حج کرنے بھی جایا جاسکے گا۔ ذرائع نے بتایا کہ وفاقی وزیر علی زیدی نے خصوصی دلچسپی لے کر وزیراعظم عمران خان سے فیری سروس چلانے کے لیے منظوری لی تھی،اس سروس سے سیاحت کے فروغ سمیت سمندری معیشت کو فروغ ملے گا۔کچھ ماہ قبل بتایا گیا تھا کہ بیرون ممالک جانے والے پاکستانیوں کو سستی سفری سہولت فراہم کرنے کیلئے فیری سروس کے آغاز کی تیاریاں آخری مراحل میں ہیں۔ اس حوالے سے بتایا گیا کہ ابتدائی طور پر 3 اسلامی ممالک کیلئے فیری سروس کا آغاز کیا جائے گا۔

سب سے پہلے کراچی سے عراق کیلئے فیری سروس شروع ہوگی۔ ایران،عراق اور شام میں مقدس مقامات کی زیارت سے متعلق پالیسی تیار کی گئی ہے۔پالیسی کے تحت کراچی سےعراق فیری سروس شروع کی جائےگی۔ جبکہ مستقبل میں گوادرسےعراق فیری سروس بھی شروع کی جائےگی۔ کراچی سےفیری سروس سے سفر کو سستا اور محفوظ بنایا جائے گا۔ واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان اور وفاقی کابینہ نے گزشتہ سال ستمبر میں پاکستان کے ساحلی شہروں سے فیری سروس کے آغاز کی باقاعدہ منظوری دے دی تھی۔ اس حوالے سے وفاقی وزیر علی زیدی کی جانب سے بتایا گیا تھا کہ بلیو اکانومی وژن کے تحت وفاقی کابینہ نے فیری شپس چلانے کی اجازت دی ہے۔ سمندر کے ذریعے سفر کرنے والوں کے لئے اب سمندری سرحدیں کھلی ہیں۔ بتایا گیا کہ فیری سروس کے آغاز سے ملک میں سیاحت کے شعبہ کو بھی فروغ ملے گا، غیر ملکی سیاحوں کی بڑی تعداد کی پاکستان آمد ممکن ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں