وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کی اپوزیشن میں بیٹھنے پر آمادگی، ٹویٹ میں اہم اعلان کردیا

کوئٹہ(نیوز ڈیسک ) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے اپوزیشن میں بیٹھنے پر آمادگی ظاہر کردی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے تحریک عدم اعتماد پر اپوزیشن کے نمبر پورے ہونے کے بعد اپوزیشن میں بیٹھنے کا اشارہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ پی ڈی ایم ناراض ارکان کے ساتھ حکومت بناتی ہے تو ہم اپوزیشن میں بھی بیٹھنے کیلئے تیار ہیں۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ اپنے ایک پیغام میں انہوں نے کہا کہ میں نے اپنا اختیار اپنی جماعت بی اے پی کے اراکین اور اتحادیوں کو دیا ہے ، موجودہ سیاسی منظر نامے میں اتحادی اور بی اے پی جو بہتر ہوگا وہ فیصلہ کریں گے۔
وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے کہا ہے کہ اقتدار کے بھوکے اپنا یہ شوق بھی پورا کر لیں لیکن اس کے بعد صوبے کو جو نقصان ہو گا اس کی ذمہ داری بی اے پی کے ناراض ارکان، پی ڈی ایم، پی ٹی آئی اور وفاق کے چند سمجھدار لوگوں پر آئے گی۔دوسری طرف سابق وزیراعلیٰ نواب ثنااللہ زہری نے کہا ہے کہ 40 ارکان جام کمال کیخلاف ہیں انہیں فوری مستعفی ہوجانا چاہیے، میرے خلاف عدم اعتماد کی تحریک آئی تو خاموش رہا، جام کمال ایک سردار ہیں اپنی عزت کا خیال کریں ، اسلام آباد میں مصروفیات کے باعث اسمبلی اجلاس میں شرکت نہیں کرسکا، پارٹی پالیسی کے مطابق ہمیں اپوزیشن کی حمایت جاری رکھے ہوئے ہیں، کہیں جانے والے نہیں، پارٹی احکامات کے پابند ہیں، پارٹی کہے گی جام صاحب کی حمایت کرو، حمایت کریں گے۔قبل ازیں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کے خلاف عدم اعتماد کا معاملے پر اسپیکرعبدالقدوس بزنجو کی رہائشگاہ پر سابق وزیراعلیٰ نواب ثنااللہ زہری اور عبدالقادربلوچ نے ملاقات کی، جمعیت علمائے اسلام کے جنرل سیکریٹری مولانا عبدالغفور حیدری، مولانا عبدالواسع بھی ملاقات میں شریک ہوئے ، اسپیکرعبدالقدوس بزنجو، نواب ثنااللہ زہری اور دیگر نے مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں