موٹروے کا انسانیت سوز واقعہ، ڈاکوئوں نے ایلیٹ فورس جیسی وردی پہن رکھی تھی، عینی شاہد

لاہور(نیوز ڈیسک) جمعرات کی شب لاہوراسلام آباد موٹروے پر ڈاکوؤں کی کارروائی کا واقعے سے متعلق عینی شاہد کا بیان سامنے آگیا ۔ عینی شاہد کے مطابق موٹر وے پر ڈکیتی کا واقعہ ہرن میناراورشیخو پورہ کے درمیان پیش آیا جہاں ڈاکوؤں نے درخت گرا کرگاڑیوں کوروکا ہوا تھا ، میں ایمبولینس میں جارہا تھا میرے آگے تقریباً 20 گاڑیاں ڈاکوؤں نے روک رکھی تھیں ، ڈاکوؤں نے ایلیٹ فورس جیسی وردیاں پہنی ہوئی تھیں ، میں نے ایمبولینس کا ہوٹرچلایا توڈاکو پولیس کی گاڑی سمجھ کر فرارہوگئے ۔دوسری جانب خاتون کی کال پر رسپانس کرنے والے پہلے

ڈولفن اہلکار علی عباس نے اپنے بیان میں بتایا کہ 2 بجکر 49 منٹ پر 15 پہ کال موصول ہوئی، 15 پر کال کرنے والا کوئی راہ گیر تھا جو ہمارے آنے سے پہلے جا چکا تھا، ہم موقع پر پہنچے تو گاڑی کا شیشہ ٹوٹا ہوا تھا اور اس میں کوئی نہیں تھا، ہم نے کالر کی تلاش شروع کی اور لائٹ جلائی تو بچے کا جوتا نظر آیا، کھائی میں اترے تو دوسرا جوتا نظر آیا۔اہلکار نے بتایا کہ معاملہ مشکوک جانتے ہوئے ہم نے ہوائی فائرنگ بھی کی، اندھیرا بہت تھا کچھ دکھائی نہیں دے رہا تھا، جھاڑیوں کی طرف گئے تو آواز آئی بھائی، پاس گئے تو خاتون نے بچوں کو لپٹایا ہوا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.