افغانستان کی موجودہ صورتحال، امریکہ بھی پاکستان کے کردار کی تعریف کرنے پر مجبور ہوگیا

واشنگٹن(این این آئی)امریکا کے محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہاہے کہ طالبان کے ساتھ بات چیت جاری رکھنا سب کے مفاد میں ہے۔ انسانی بحران سے بچنے کے لیے بات چیت جاری رکھنا ہو گی، افغان بینک کے منجمد 10 ارب ڈالر کا معاملہ فیڈرل ریزرو دیکھ رہا ہے۔ زلمے خلیل زاد کی طالبان سے بات چیت جاری ہے، کابل ایئر پورٹ سے امریکی و دیگر شہریوں کی روانگی میں طالبان کے تعاون کو سراہتے ہیں۔افغان حکومت کے ساتھ تعلقات کے لیے معاملات کا جائزہ لے رہے ہیں، افغانستان میں 20 سال سے حاصل ہونے والے مفادات ضائع نہیں ہونے چاہئیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق واشنگٹن میں نیوز

کانفرنس کرتے ہوئے امریکا کے محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا کہ طالبان سے وعدوں پر عمل ہوتے ہوئے دیکھنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ افغان حکومت کے ساتھ تعلقات کے لیے معاملات کا جائزہ لے رہے ہیں، افغانستان میں 20 سال سے حاصل ہونے والے مفادات ضائع نہیں ہونے چاہئیں۔نیڈ پرائس کا کہنا تھا کہ طالبان کے ساتھ رابطے میں ہیں اور افغان عوام کی مدد جاری رکھیں گے، تمام ممالک اس بات پر متفق ہیں کہ وہ سب کرنا چاہتے ہیں جو کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ انسانی بحران سے بچنے کے لیے بات چیت جاری رکھنا ہو گی، افغان بینک کے منجمد 10 ارب ڈالر کا معاملہ فیڈرل ریزرو دیکھ رہا ہے۔ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نے کہا کہ زلمے خلیل زاد کی طالبان سے بات چیت جاری ہے، کابل ایئر پورٹ سے امریکی و دیگر شہریوں کی روانگی میں طالبان کے تعاون کو سراہتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ طالبان کی جانب سے اس طرح کے اقدامات عالمی پذیرائی حاصل کر سکتے ہیں، افغانستان میں رہ جانے والے امریکیوں سے رابطے میں بھی ہیں۔امریکا کے محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے نیوز کانفرنس میں افغانستان کی موجودہ صورتِ حال میں پاکستان کے کردار کو بھی سراہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں