افغان بچیاں آج پھر سے اسی مقام پر ہیں جس مقام پر کبھی میں تھی، ملالہ یوسف زئی

لندن (نیوز ڈیسک)مجھے خبر ملی ہے کہ افغان لڑکیوں کویونیورسٹیوں اورخاتون کارکنوں کودفاتر سے واپس بھیج دیا گیا، افغان بچیاں آج پھر سے اسی مقام پر ہیں جس مقام پر کبھی میں تھی، ملالہ یوسف زئی کاافغان خواتین سے متعلق خدشات کا اظہار۔ تفصیلات کے مطابق نوبیل امن انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی نے کہا ہے کہ انھیں اپنی افغان بہنوں سے متعلق خدشات ہیں۔ملالہ یوسف زئی کا کہنا تھا کہ افغانستان میں لڑکیوں کویونیورسٹیوں اورخاتون کارکنوں کودفاتر سے واپس بھیجے جانے کی خبریں ملی ہیں۔نیویارک ٹائمز میں شائع مضمون میں ملالہ نے لکھا کہ وہ اپنے کیریئر کے راستے پر گامزن ہیں اور اب یہ تصور نہیں کرسکتیں

کہ وہ ایک ایسی زندگی کی طرف واپس جائیں گی جو ان کے بندوق بردار مرد طے کریں۔ان کا کہنا تھا کہ مگر افغان بچیاں پھر سے اسی مقام پر ہیں جس مقام پر کبھی وہ تھیں اور انھیں یہ خدشہ ہے کہ وہ بچیاں دوبارہ اپنے کلاس روم کی شکل نہیں دیکھ سکیں گی۔یاد رہے کہ کچھ روز قبل برطانیہ میں مقیم ملالہ یوسف زئی نے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کو افغانستان کی موجودہ صورتحال پر فون کیا تھا اور وہاں خواتین کے حقوق پر بات کی تھی۔وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں مقیم پاکستانی طالبہ ملالہ یوسف زئی نے انہیں افغانستان کی موجودہ صورتحال پر فون کیا اور وہاں خواتین کے حقوق پر بات کی۔وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ ملالہ یوسف زئی نےانہیں فون کر کےافغانستان میں خواتین کےحقوق پربات کی۔فواد چوہدری نے بتایا کہ ملالہ نےافغان خواتین کی تعلیم اور حقوق سے متعلق وزیراعظم کو خط بھی لکھا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر افغان حکومت عمران خان کی بات پر دھیان دیتی تو یہ حالات نہ ہوتے، افغان مسئلے کے حل کے لیے کام کررہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں