وزیر اعظم عمران خان فردوس اعوان کو دوبارہ وفاق میں لانے کے خواہشمند،اہم ذمہ داریاں سونپنے کا امکان

لاہور (نیوز ڈیسک)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کو وفاق میں اہم ذمہ داری سونپنے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کی ملاقات ہوئی۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کو وفاق اور صوبے میں نئی ذمہ داری دینے کی خوشخبری سنائی گئی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیر اعظم عمران خان ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کو دوبارہ وفاق میں لانے کے خواہشمند ہیں۔وہ چاہتے ہیں کہ فردوس عاشق اعوان وفاق میں کردار ادا کریں۔جب کہ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار چاہتے ہیں فردوس عاشق اعوان صوطے میں سیاسی کردار ادا کریں۔

فردوس عاشق نے وزیراعلیٰ اور وزیراعظم کا اعتماد کرنے پر شکریہ ادا کیا ہے۔فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ قیادت جہاں مناسب سمجھے ذمہ داریان ادا کرنے کے لیے تیار ہوں۔دوسری جانب اب سے کچھ دیر قبل ہی وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور عون چودھری سے استعفیٰ طلب کیا گیا جس پر وہ اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے۔ بتایا گیا ہے کہ عون چودھری کو وزیراعلیٰ ہاؤس طلب کیا گیا جہاں ان سے استعفیٰ لیا گیا۔عون چودھری نے اپنا تحریری استعفیٰ پیش کر دیا۔ میڈیا ذرائع نے بتایا کہ عون چودھری ترین گروپ کے سرگرم رہنما ہیں۔ایک وقت میں عون چوہدری عمران خان کے بھی بہت قریب سمجھے جاتے ہیں۔ عون چودھری پر اراکین اسمبلی کو ترین گروپ میں لانے کے لیے لابنگ کرنے کا الزام بھی ہے۔ استعفے کے معاملے پر رد عمل دیتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما عون چودھری کا کہنا ہے کہ مجھے آج وزیراعلیٰ آفس بلوا کر ترین گروپ سے علیحدگی کا کہا گیا، جہانگیر ترین کے گروپ سے علیحدگی سے انکار پر مجھے استعفٰی دینے کا کہا گیا۔جہانگیر ترین کی پارٹی کے لیے خدمات سب جانتے ہیں۔ میں نے کہا کہ میں استعفیٰ دیتا ہوں لیکن ترین گروپ کو نہیں چھوڑ سکتا ۔ انہوں نے پارٹی اور حکومت سے شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے سیاسی خدمات کا یہ صلہ دیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں