خلیل الرحمٰن کی ایک مرتبہ پھر متعدد شخصیات کے حوالے سے نامناسب گفتگو

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) معروف ڈرامہ رائیٹر خلیل الرحمٰن قمر ماضی میں خواتین اور اداکاراؤں کے حوالے سے قدرے نامناسب بیانات دینے پر تنقید کا نشانہ بن چکے ہیں، خلیل الرحمن کی جانب سے ایک مرتبہ پھر متعدد شوبز شخصیات کے حوالے سے نامناسب بیانات دئیے گئے ہیں۔حال ہی میں انہوں نے ایک بار پھر ماہرہ خان، عفت عمر، عدنان ملک، ریشم اور سونیا حسین کے حوالے سے نامناسب باتیں کیں۔پروگرام کے مختلف سیگمنٹس میں انہوں نے کئی سوالوں کے جوابات دئیے۔پروگرام کے ایک سیگمنٹ میں جب انہیں مختلف اداکاروں کی تصاویر دکھا کر ان سے رائے مانگی گئی تو انہوں نے کئی شخصیات کے حوالے

سے نامناسب باتیں جب کہ زیادہ تر معروف شخصیات کو انہوں نے پہچاننے سے ہی انکار کردیا۔ڈراما نگار کو جب فہد مصطفیٰ کی تصویر دکھائی گئی تو پہلے انہوں نے انہیں پہچانا ہی نہیں لیکن میزبان کی جانب سے بتائے جانے پر انہوں نے میزبان کو اپنا دوست قرار دیا۔اداکارہ فیروز خان کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ انہیں امید نہیں تھی کہ وہ اتنے اچھے اداکار بن پائیں گے، ساتھ ہی انہوں نے بتایا کہ ماضی میں انہوں نے آڈیشن کے دوران فیروز خان کو واپس گھر بھیج دیا تھا مگر اب جلد ہی دونوں ایک منصوبے میں کام کرتے دکھائی دیں گے۔خلیل الرحمٰن قمر نے اداکارہ وینا ملک کی تعریف کرتے ہوئے انہیں بہترین قرار دیا اور کہا کہ انہوں نے ان کے ساتھ بھی کام کیا ہے۔خلیل الرحمان نے ماہرہ خان سے متعلق کہا کہ مجھے زندگی بھر کا غم ہے کہ اس میری زندگی پر بننے والے سیریل پر کام کیں اور میں اس میں ہیروئن تھی اور یہ غم مجھے ہمیشہ رہے گا،جب انہیں حامد میر کی تصویر دکھائی گئی تو انہوں نے مکہا کہ میں اس شخص سے نفرت کرتا ہوں آگے چلیں۔۔عفت عمر کے بارے میں کہا کہ یہ وہ ہے جس سے میں نفرت بھی نہیں کرتا یہ اس قابل بھی نہیں۔خلیل الرحمن نے مزید کہا کہ وہ سوشل شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک ویڈیوز بنانے والوں کو اسٹار نہیں مانتے۔ خلیل الرحمٰن قمر نے تسلیم کیا کہ ٹک ٹاکرز ٹیلنٹڈ ہیں مگر وہ انہیں تجویز دیتے ہیں کہ وہ دوسروں کی آواز پر لپسنگ نہ کریں بلکہ خود اپنی آواز میں ویڈیوز شوٹ کریں، تاکہ کوئی بھی ڈراما ساز ان کا حقیقی ٹیلنٹ دیکھ کر انہیں کاسٹ کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں