عیدالاضحیٰ پر سیاحتی مقامات پر27 لاکھ سے زائد افراد کی آمد، صوبے نے اربوں کمالیے

پشاور(نیوز ڈیسک)خیبرپختونخواہ نے عیدالاضحیٰ پر سیاحت سے 66 ارب کما لیے، عیدالاضحیٰ پر سیاحتی مقامات پر27 لاکھ سے زائد افراد کی آمد ہوئی، لاکھوں کی تعداد میں سیاح اب بھی سیاحتی مقامات میں سیروتفریح کر رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخواہ حکومت نے عید الاضحیٰ پر سیاحوں کی آمد اور کاروبار سے متعلق رپورٹ جاری کر دی ہے، جس کے تحت عید الاضحیٰ پر سیاحتی مقامات پر27 لاکھ سے زائد افراد آئے، لاکھوں سیاحوں کی آمد سے 66 ارب روپے کا کاروبار ہوا۔سیاحت سے مقامی معیشت کو بھی 27 ارب سے زائد کا فائدہ ہوا۔ عید الاضحیٰ کے صرف 4 دنوں میں مجموعی طور پر27 لاکھ 70 ہزارسیاحوں کی آمد ہوئی۔

ان سیاحوں میں سوات میں 10 لاکھ 50 سے زائد ، گلیات میں 10 لاکھ اور کمراٹ میں ایک لاکھ 20 ہزار سیاحوں نے رخ کیا۔وادی کاغان میں7 لاکھ سے زائد جبکہ چترال 50 ہزار سیاحوں کی آمد ہوئی۔ عید کے دنوں میں صوبے کے بالائی علاقوں میں سیاحوں کی آمد سے مقامی لوگوں کے روزگار اور آمدن میں بھی اضافہ ہوا جبکہ لاکھوں کی تعداد میں سیاح اب بھی صوبے کے سیاحتی مقامات میں سیر وتفریح کر رہے ہیں۔دوسری جانب وزارت خزانہ نے ملکی معیشت پرماہانہ اپ ڈیٹ آؤٹ لک رپورٹ جاری کردی ہے، رپورٹ میں بتایا گیا کہ معیشت کی بحالی اور معاشی سرگرمیوں میں اضافہ سمیت ٹیکس ریونیو، ترسیلات زر میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ ترسیلات زر27 فیصد اضافے سے 29.4 ارب ڈالر ہوگئے، جولائی تا جون ترسیلات زر میں 27 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ اسی طرح ملکی برآمدات 13.7 فیصد اضافہ ہوا ہے جس کے بعد برآمدات 25.6 ارب ڈالر ہوگئیں، جبکہ ملکی درآمدات 23.2 فیصد اضافہ ہوا ج سکے بعد درآمدات 43.8 ارب ڈالر کی سطح پر پہنچ گئی ہیں۔کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 58.4 فیصد کمی ہوئی ہے جس کے ساتھ کرنٹ اکاؤنٹ 1.9ارب ڈالر سرپلس رہا، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ جی ڈی پی کا0.6 فیصد مثبت ریکارڈ کیا گیا۔ پورٹ فولیو سرمایہ کاری مثبت رجحان کے ساتھ 2.55ارب ڈالر اور غیرملکی سرمایہ کاری 122.4فیصد اضافے سے4.61 ارب ڈالررہی۔ زرمبادلہ ذخائر جولائی کے اختتام تک 24 ارب 85 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئے، اسٹیٹ بینک 17.81 ارب ڈالر، کمرشل بینکوں کے ذخائر7.04 ارب ڈالرر اور

ڈالر کی شرح تبادلہ 161.23روپے فی ڈالر کی سطح پر پہنچ گئی ہیں۔اسی طرح مہنگائی کی سالانہ شرح میں اضافہ جون میں9.7 فیصد اور ماہ جولائی تا جون میں 8.9 فیصد رہا جبکہ بڑی صنعتوں کی شرح نمو مئی میں 36.8 فیصد اور جولائی تا مئی میں 14.6فیصد تک پہنچ گئی،اسٹاک ایکس چینج انڈیکس 47 ہزار673 پوائنٹس عبورکر گیا۔ اسی طرح پہلے11ماہ میں ٹیکس ریونیو 18.4فیصد اضافہ ہوا جس سے4732 ارب روپے ہوگئے، نان ٹیکس آمدنی6.2 فیصد کمی ہوئی جس سے آمدنی 1281 ارب رہی ، مالی سال میں پی ایس ڈی پی کی مد میں 658.5 ارب روپے منظور کیے گئے۔مالیاتی خسارہ کم ہو کر2197 ارب ہوگئے ہیں۔ زرعی قرضے10.3فیصد اضافہ ہوا جس سے 1191ارب روپے کی سطح پر پہنچ گئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں