پاکستان کی عریش فاطمہ دنیا کی سب سے کم عمر ترین مائیکروسوفٹ پروفیشنل بن گئیں

کراچی(نیوز ڈیسک) پاکستان کی ایک اور بیٹی نے ملک کا نام روشن کر دیا، کراچی سے تعلق رکھنے والے چار سالہ عریش فاطمہ دنیا کی سب سے کم عمر ترین مائیکروسوفٹ پروفیشنل بن گئیں، عرش کو ذہین پاکستانیوں کی فہرست میں شامل کر لیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کی چار سالہ عریش فاطمہ دنیا کی سب سے کم عمر ترین مائیکروسوفٹ پروفیشنل بن گئیں۔خلیج ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق کراچی سے تعلق رکھنے والی اریش فاطمہ نے مائیکرو سافٹ کے پروفیشنل امتحان میں شرکت کی۔مائیکرو سوفٹ کے زیر اہتمام امتحان کو پاس کرنے کے لئے کم سے کم 700 پوائنٹس کی ضرورت ہوتی ہے

جب کہ ننھی اریش فاطمہ 831 پوائنٹس حاصل کرنے میں کامیاب رہی۔اس کامیابی نے انہیں ان ذہین پاکستانیوں کی فہرست میں شامل کر دیا ہے، جنہوں نے کم عمری میں ایم سی پی کی سند حاصل کی۔رپورٹ کے مطابق اریش کے والدین نے جب اپنی بیٹی میں انٹرنیٹ کے توسط سے نئی چیزیں سیکھنے کی صلاحیت اور تجسس کو دیکھا تو انہوں نے اس کی دلچسپی کمپیوٹر سیکھنے کی جانب راغب کی۔اریش کے والد جو آئی ٹی کے شعبے سے وابستہ ہیں ، انہوں نے اپنی بیٹی کی ذہانت اور دلچسپی کو دیکھتے ہوئے ان کو کمپیوٹر اسکلز سیکھنے میں ان کی بھرپور رہنمائی کی۔کورونا کے دوران لاک ڈاؤن میں اریش کے والد نے انہیں مائیکرو سافٹ ورڈ اور مائیکرو سافٹ آفس پر کام کرنا سکھایا اور وہ اپنی عمدہ یاداشت سے ان دونوں سوفٹ وئیرز پر مہارت حاصل کرتی چلی گئیں اور بلآخر امتحان میں کامیاب ہوگئیں۔واضح رہے کہ اس سے قبل ارفع کریم پاکستانکی پہچان بننے والی کم عمرترین مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ پروفیشنل تھیں۔انہوں نے نو برس کی عمر میں دنیا کی کم عمر ترین مائیکروسافٹ سافٹ سرٹیفائیڈ کا اعزازحاصل کیا تھا۔سنہ 2005میں مائیکرو سافٹ کے خالق بل گیٹس نے ارفع کریم سے خصوصی ملاقات کی اور انھیں مائیکرو سافٹ سرٹیفائیڈ ایپلی کیشن کی سند عطا کی تھی ۔مائیکرو سافٹ نے بار سلونا میں منعقدہ سن 2006 کی تکنیکی ڈیولپرز کانفرنس میں پوری دنیا سے پانچ ہزار سے زیادہ مندوبین میں سے پاکستان سے صرف ارفع کریم کو مد عو کیا گیا تھا۔اس کے علاوہ ارفع کریم نے دبئی کے فلائنگ کلب میں صرف دس سال کی عمر میں ایک طیارہ اڑایا اور طیارہ اڑانے کا سرٹیفیکٹ بھی حاصل کیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں