معروف گلوکار شفاءاللہ روکھڑی داعی اجل کو لبیک کہہ گئے

میانوالی(نیوز ڈیسک) معروف سرائیکی گلوکار شفاء اللہ خان روکھڑی دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گئے۔طبیعت زیادہ خراب ہونے پر انہیں اسلام آباد اسپتال لایا گیا مگر وہ جانبر نہ ہو سکے اور خالق حقیقی سے جا ملے۔شفاءاللہ خان روکھڑی نیازی کا تعلق نیازی قبیلہ سے تھا اور وہ متوسط گھرانے سے تعلق رکھتے تھے۔گلوکاری کے شعبہ میں قدم رکھنے سے قبل شفاءاللہ خان روکھڑی پنجاب پولیس میں ملازمت کرتے تھے تاہم خواہش ان کی گلوکار بننے کی ہی تھی۔گلوکاری کے شوق کو پورا کرنے کے لیے انہوں نے پولیس کی ملازمت کو خیرباد کہہ کر باقاعدہ طور پر گلوکاری کے میدان میں قدم رکھ دیا۔شفااللہ روکھڑی دس سال تک گلوکاری میں محنت کرتے رہے اور 1995 میں اپنا پہلا البم ریلیز کیا جو انہیں

کامیابی کی بلندیوں تک لے گیا۔شفاءاللہ خان روکھڑی اور ان کے صاحبزادے ذیشان خان روکھڑی نے موسیقی میں اپنا نام پیدا کیا اور سوشل میڈیا پر ان کے سبکرائیبرز کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ان کی میت اسلام آباد سے واپس میانوالی کے لیے روانہ کر دی گئی ہے۔مختلف سیاسی و سماجی شخصیات نے شفاءاللہ خان روکھڑی کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔شفاءاللہ خان روکھڑی کو آبائی قبرستان میں سپرد خاک کیا جائے گا۔شفاءاللہ خان روکھڑی کے صاحبزادے ذیشان خان روکھڑی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ میرے بابا جان شفا الّلہ خان روکھڑی وفات پاگئے ہیں۔ الّلہ تعالی میرے بابا جان کو جنت میں جگہ عطا فرمائے۔انہوں نے مزید کہا کہ جنازہ آج شام 9 بجے میانوالی اسٹیڈیم میں ہو گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.