حکومت نے ایک بار پھر بجلی مہنگی کرنے کی تیاری کرلی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) حکومت نے بجلی مزید مہنگی کرنے کا عندیہ دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے پیٹرولیم اور توانائی تابش گوہر نے کہا ہے کہ بجلی کے نرخوں میں کچھ نہ کچھ اضافہ ناگزیر ہے تاہم پوری کوشش ہے کہ 300 یونٹ تک استعمال کرنے والوں کے لیے اضافہ نہ کیا جائے اس سلسلے میں آئی ایم ایف کوآگاہ کردیا ہے کہ ابھی بجلی کے نرخ بڑھانے کا وقت نہیں ہے۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ ورلڈ بینک اور آئی ایم ایف کو کہا ہے کہ بجلی کے نرخ بڑھنے سے لوگ سولر کی طرف چلے جائیں گے جب

کہ معیشت بھی متحمل نہیں ہوسکتی کہ بجلی کے نرخوں میں مزید اضافہ کیا جائے۔ خیال رہے کہ اس سے پہلے یہ خبر بھی آئی تھی کہ حکومت نے آئی ایم ایف کو بجلی مزید مہنگی کرنے اور ٹیکسز لگانے اور ٹیکس وصولیوں کا ہدف پورا کرنے کے لیے یقین دہانی کرادی ، بتایا گیا ہے کہ آئی ایم ایف کو یہ بھی یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ رواں برس ٹیکس وصولیاں 4600 ارب رہیں گی ، جب کہ رواں مالی سال کے 3 ماہ میں بجلی کی قیمت میں4 روپے97 پیسے اضافہ کیا جائے گا ، اس کے علاوہ پیٹرولیم لیوی کی مدمیں وصولیاں 450 ارب کی بجائے 511 ارب روپے سے زائد ہوں گی اور اگلے سال پیٹرولیم لیوی کی مد میں 600 ارب روپے سے زیادہ وصولی کی جائے گی۔میڈیا ذرائع کے مطابق پاکستان نے آئی ایم ایف کو یقین دہانی کرائی ہے کہ اگلے مالی سال میں ٹیکس وصولیوں کا ہدف 6 ہزار ارب روپے رکھا جائے گا ، اس ضمن میں 13 سو سے 14 سو ارب روپے کے مزید ٹیکسز لگائے جائییں گے یا پھر موجودہ ٹیکسز کی شرح میں ہی اضافہ کیا جائے گا ، جی ڈی پی میں ٹیکسوں کا حصہ مزید 3 فیصد بڑھایا جائے گا ، کھانے پینے کی اشیاء ، ادویات اور تعلیم کے حوالے سے اشیاء پرٹیکس استثنیٰ کو بھی ختم کردیا جائے گا۔

متعلقہ آرٹیکلز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button