اس کے بغیر خطے میں امن ممکن نہیں ، آرمی چیف نے خطے میںقیام امن کیلئے سب سے اہم چیز بتادی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل کے بغیرخطے میں امن کا قیام ممکن نہیں۔نیشنل سیکیورٹی ڈائیلاگ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی چیلنجز کے باوجود پاکستان ہتھیاروں کی دوڑ میں شامل نہیں ہوا۔ ہمسایوں کے ساتھ تمام تنازعات پرامن اور باوقار مذاکرات سے حل کرنا چاہتے ہیں۔آرمی چیف نے کہا کہ نیشنل سیکیورٹی ڈویژن ڈائیلاگ وقت کی ضرورت ہے۔ ہمیں خطے کی خوشحالی کےلیے آگے بڑھناہے۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کہتے ہیں پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کی بڑی وجہ مسئلہ کشمیر ہے۔

خطے میں امن کیلئے پرامن طور پر مسئلہ کشمیر کا حل ضروری ہے۔آرمی چیف نے کہا ہم چاہتے ہیں کشمیر کا مسئلہ کشمیریوں کی امنگو ں کے مطابق حل ہو۔ پاکستان خطے میں ایک ذمہ دار ملک ہے۔ خطے میں قیام ا من سے دیگر ممالک کی خوشحالی جڑی ہے۔آرمی چیف کا کہنا تھا کہ ہمسایوں کے ساتھ تمام تنازعات پرامن اور باوقار مذاکرات سے حل کرنا چاہتے ہیں، پاکستان اور بھارت میں کشیدگی کی بڑی وجہ مسئلہ کشمیر ہے، مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل کے بغیر خطے میں امن کا قیام ممکن نہیں، وقت آ گیا ہے کہ ماضی کو دفن کر کے آگے بڑھا جائے۔ لیکن بامعنی مذاکرات کے ذریعے امن عمل شروع ہونے کے لیے ہمارے ہمسائے کو سازگار ماحول پیدا کرنا ہو گا.جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہ کہ افغانستان میں امن خطےمیں امن کی ضمانت ہے، افغانستان میں امن کے قیام کے لئے پاکستان اہم کردار ادا کررہا ہے۔ہماری کوششوں سے افغان امن معاہدہ ہوا۔ ہم اس عمل کی پوری حمایت کرتے ہیں۔ ہم نے افغانستان کو اجازت دی ہے کہ وہ اپنا سامان بھارت تک پہنچا سکے۔ ہم نے افغانستان کو دعوت دی ہے کہ وہ سی پیک کا حصہ بنے۔سربراہ پاک فوج کا کہنا تھا کہ آج دنیا کو مختلف طرز کی دہشت گردی کا سامنا ہے، ہم دہشت گردی کے خاتمے کے لئے ایک طویل جدوجہد کے بعد منزل کے قریب ہیں، دہشت گردی اور انتہاپسندی پر قابو پانے کے لئے کم ترقی یافتہ علاقوں کو ترقی دی جارہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں